Monday , September 24 2018
Home / Top Stories / مذہبی مقامات پر گوشت پھینک کر سنگھ پریوار فساد پھیلانا چاہتا ہے : ممتا بنرجی

مذہبی مقامات پر گوشت پھینک کر سنگھ پریوار فساد پھیلانا چاہتا ہے : ممتا بنرجی

کولکتہ۔7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے بی جے پی اور آر ایس ایس پر ا لزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں فرقہ وارانہ فسادات پھیلانے کے لیے سنگ پریوار خفیہ طریقہ سے مذہبی مقامات پر بڑے جانور کا گوشت پھینک رہی ہے۔ انہوں نے پولیس انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ وہ فوری طور پر کمیونٹی ڈیولپمنٹ کمیٹی قائم کرے تاکہ اس طرح کی حرکتوں میں ملوث عناصر کو گرفتار کرتے ہوئے ایسے ناخوشگوار حادثات پر قابو پایا جاسکے۔ جھرگام میں انتظامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ممتابنرجی نے کہا کہ یہ لوگ (آر ایس ایس اور بی جے پی) ایک نئی سازش کا حال ہی میں آغاز کیا ہے۔ بقول ان کے یہ لوگ چند غیر سماجی عناصر کو پیسے دیتے ہوئے انہیں مسجد اور مندروں میں بڑے جانوروں کا گوشت پھینکے۔ یہ ایک مکمل سازش ہے کہ یہاں کسی بھی طرح دونوں فرقوں کے درمیان فرقہ وارانہ تصادم شروع کرایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ یہ لوگ وہی حرکت ایک بار پھر دہرانے کے فراق میں ہے جس طرح انہوں نے رام نومی کے موقع پر کیا تھا۔ تاہم میری نظر میں ہندو اور مسلم دونوں برابر ہیں۔ میں دونوں کی فلاح و بہبود چاہتی ہوں اور خلاف ورزی کرنے والا کوئی بھی ہو اسے پکڑکر سزا دینا ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے تمام پولیس اسٹیشن کے انچارج کو اس معاملہ میں سختی سے چوکسی برتنے کی ہدایت دی ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ ابھی حال ہی میں ضلع 24 پرگنا کے دو مقامات پر اس طرح کے گھنائونے واقعات پیش آچکے ہیں اور اس تعلق سے بی جے پی اور آر ایس ایس سے تعلق رکھنے والے چند عناصر کو ہوڑا سے گرفتار کیا گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ میں واضح طور پر ان کا نام لے رہی ہوں۔ اگر اس معاملے میں کوئی ترنمول کانگریس کارکن گرفتار ہوتا ہے تو میں اس کا بھی نام واضح کروں گی۔ انہوں نے اس طرح کے عناصر کو پکڑنے والوں کو ایک ہزار روپئے انعام دینے کا بھی اعلان کیا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT