مرضی کے خلاف شادی، باپ کا بیٹی اور داماد پر قاتلانہ حملہ

دلت سے شادی پر برہمی، خاندان کی عزت کیلئے انتہائی اقدام کا ایک اور واقعہ

حیدرآباد ۔ /19 ستمبر (سیاست نیوز) ضلع نلگنڈہ کے مریال گوڑہ میں بین طبقاتی شادی کے نتیجہ میں پرنئے کمار قتل کے اندرون چند دن شہر میں اسی قسم کا ایک واقعہ آج پیش آیا جس میں برہم باپ نے اپنی بیٹی پر قاتلانہ حملہ کرکے اسے شدید زخمی کردیا۔پولیس کی خصوصی ٹیموں نے خاطی باپ کو اندرون چار گھنٹے گرفتار کرلیا ۔ تفصیلات کے بموجب ایس آر نگر ایرہ گڈہ گوکل تھیٹر کے روبرو آج دوپہر 3.30 بجے منوہر چاری نامی شخص نے اپنی بیٹی مادھوی اور داماد سندیپ پر درانتی سے حملہ کرکے انہیں شدید زخمی کردیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ مادھوی نے ایک ہفتہ قبل دلت طبقہ سے تعلق رکھنے والے سندیپ سے عاشقی کے بعد شادی کی تھی جو لڑکی کے باپ کو ناپسند تھی ۔ والدین کی رضامندی کے بغیر مادھوی نے مندر میں شادی کی تھی اور جب سے ہی منوہر چاری اسے سبق سکھانا چاہتا تھا ۔ آج دوپہر منوہر چاری نے اس کی بیٹی مادھوی پر اس وقت درانتی سے حملہ کردیا جب وہ اپنے شوہر سندیپ کے ہمراہ موٹر سائیکل پر جارہی تھی ۔ مسلسل ضربات لگانے کے نتیجہ میں مادھوی شدید زخمی ہوگئی اور اسے کارپوریٹ دواخانہ منتقل کیا گیا جہاں اس کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے ۔ حملہ کرنے کے بعد باپ وہاں سے فرار ہوگیا اور پولیس ایس آر نگر نے اسے ایم ایس مقطعہ علاقہ میں حراست میں لے لیا ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ویسٹ زون اے آر سرینواس نے کہا کہ منوہر چاری نشہ کی حالت میں تھا اور اس نے منصوبہ بند طریقے سے بیٹی پر حملہ کیا ہے ۔ پولیس نے باپ کے قبضے سے حملہ میں استعمال کئے گئے ہتھیار کو برآمد کرلیا اور اس کے خلاف ایک مقدمہ درج کرلیا گیا ہے اور تحقیقات جاری ہے ۔ واضح رہے کہ ضلع نلگنڈہ کے مریال گوڑہ ٹاؤن میں چند دن قبل امروتا ورشنی کی دلت طبقہ کے نوجوان پرنئے کمار سے شادی کے نتیجہ میں لڑکی کے باپ نے ماروتی راؤ نے کرایہ کے قاتلوں کی مدد سے پرنئے کمار کا قتل کرادیا ۔

TOPPOPULARRECENT