Thursday , April 19 2018
Home / شہر کی خبریں / مرکزکے خلاف ہم خیال جماعتوں کے اتحاد کی مساعی

مرکزکے خلاف ہم خیال جماعتوں کے اتحاد کی مساعی

شہر میں سی پی ایم قومی کانگریس کی تیاریاں، بی وا راگھولو
حیدرآباد 9 اپریل (سیاست نیوز) سی پی ایم نے مودی حکومت کے خلاف ہم خیال جمہوری اور ترقی پسند طاقتوں کو متحد کرنے تحریک شروع کی ہے۔ پارٹی نے مرکز میں تیسرے متبادل کی تشکیل کی گزشتہ تین دہوں کی کوششوں میں ناکامی کے پس منظر میں وضاحت نہیں کی کہ آیا یہ متبادل بی جے پی محاذ ہوگا۔ رکن پولیٹ بیورو بی وی راگھولو نے کہا کہ تیسرے محاذ کی کوششوں سے پارٹی استحکام پر توجہ نہیں دی جاسکی۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کو بنیادی سطح سے مستحکم کرنے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ راگھولو کے مطابق بائیں بازو محاذ کی کمزوری کی کئی وجوہات ہیں۔ پارٹی نے متبادل محاذ کی تیاری پر کافی وقت صرف کردیا۔ انہوں نے کانگریس سے کسی مفاہمت کے امکانات سے انکار کیا۔ انہوں نے بتایا کہ پارٹی کی 22 ویں قومی کانگریس 18 اپریل کو حیدرآباد میں شروع ہوگی۔ 850 مندوبین شرکت کریں گے جن میں کیرالا کے چیف منسٹر پنیرائی وجیئن سابق چیف منسٹر تریپورہ اور سابق چیف منسٹر مغربی بنگال شامل ہیں ۔ مندوبین مستقبل میں قومی اور ریاست سطح پر پارٹی کے موقف اور حکمت عملی کو طئے کریں انہوں نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی حکومت ہر سطح پر ناکام ہوچکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی پارٹی سے مفاہمت ، اصولوں و پالیسیوں کی بنیاد پر ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ سی پی ایم انتخابی اصلاحات کے حق میں ہیں۔ راگھولو نے چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ سے سی پی ایم قائدین کی ملاقات کو غیر سیاسی قرار دیا۔ قومی کانگریس کے انتظامات کے سلسلہ حکومت سے تعاون حاصل کرنے ملاقات کی گئی ۔ راگھولو نے کہا کہ ملاقات کے دوران کے سی آر کی جانب سے قومی سطح پر تھرڈ فرنٹ کی تشکیل کا مسئلہ زیر بحث رہا۔

TOPPOPULARRECENT