Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / مرکزی بجٹ میں ریاست تلنگانہ نظرانداز

مرکزی بجٹ میں ریاست تلنگانہ نظرانداز

بجٹ کارپوریٹس کیلئے خوش کن ہوسکتا ہے، ویلفیر پارٹی آف انڈیا کا بیان

بجٹ کارپوریٹس کیلئے خوش کن ہوسکتا ہے، ویلفیر پارٹی آف انڈیا کا بیان
حیدرآباد ۔ یکم مارچ (پریس نوٹ) ویلفیر پارٹی آف انڈیا، تلنگانہ یونٹ کے صدر سید شفیع اللہ قادری نے ایک پریس نوٹ میں کہاکہ مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کی جانب سے پیش کئے گئے مرکزی بجٹ 2015-16 ء کو کارپوریٹس اور ٹیکس دہندگان کیلئے ایک خوش کن بجٹ کے طور پر ہی دیکھا جاسکتا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ یہ محسوس کرتے ہیں کہ بجٹ میں نئی ریاست تلنگانہ کیلئے کوئی ٹھوس اقدام نہیں کیا گیا۔ اُنھوں نے کہاکہ نئی تشکیل پارٹی ریاست تلنگانہ کیلئے توقعات تھیں لیکن اسے ریلوے اور عام بجٹ دونوں میں نظرانداز کردیا گیا۔ مرکز کی جانب سے کہا جارہا ہے کہ چھوٹی ریاستوں کو ترجیح دیتے ہوئے فنڈس جاری کئے جائیں گے لیکن مرکزی حکومت نے درحقیقت کچھ نہیں ہے۔ ریاستی حکومت کی ایک اسکیم کو بھی مرکز سے فنڈ فراہم کی جانے والی اسکیم تسلیم نہیں کیا گیا۔ اُنھوں نے کہاکہ ایک روایت کے طور پر مرکز نے نئی قائم ہوئی تلگو ریاست تلنگانہ کو نظرانداز کردیا۔ ریاستی حکومت کی جانب سے کی گئی کئی نمائندگیوں کے باوجود مرکز نے تلنگانہ کیلئے کچھ نہیں کیا۔ مسٹر قادری نے کہاکہ اسٹیٹ بی جے پی یونٹ بھی ریاست تلنگانہ میں انفراسٹرکچر کی ترقی کیلئے مرکزی بجٹ میں ریاست کیلئے خاطر خواہ رقم مختص کروانے کیلئے مرکزی حکومت پر اثرانداز ہونے میں ناکام ہوگئی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ تلنگانہ کے عوام کیلئے پانی اور برقی دو بڑے مسائل ہیں لیکن ریاست کے ان اہم مسائل کو حل کرنے کیلئے بجٹ 2015 میں کوئی وعدہ نہیں کیا گیا۔ آبپاشی، زراعت، انفراسٹرکچر اور دیگر بڑے مسائل کو نظرانداز کردیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT