Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکزی حکومت پر تلنگانہ کے ساتھ نا انصافی اور جانبداری کا الزام

مرکزی حکومت پر تلنگانہ کے ساتھ نا انصافی اور جانبداری کا الزام

نظام آباد میں امکنہ الاٹ منٹ پر کے کویتا ایم پی کی چیف منسٹر کے سی آر سے ملاقات
حیدرآباد۔/20نومبر، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ کویتا نے مرکزی حکومت پر تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی اور جانبداری کا الزام عائد کیا۔ کویتا نے آج سکریٹریٹ میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے ملاقات کی اور 2 بیڈروم سے متعلق اسکیم کے تحت نظام آباد کو 1500 مکانات الاٹ کرنے پر اظہار تشکر کیا۔ بعد میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کویتا نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ہاؤزنگ اسکیم کے تحت مکانات کے الاٹمنٹ میں تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔ آندھرا پردیش کو ایک لاکھ 90ہزار مکانات الاٹ کئے گئے جبکہ تلنگانہ کو صرف 10ہزار مکانات ہی الاٹ کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ صرف ضلع نظام آباد کیلئے یہ مکانات کافی نہیں ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کی اس جانبداری کے خلاف پارلیمنٹ میں آواز اٹھائی جائے گی۔ کویتا نے کہا کہ تلگودیشم کے اشارہ پر مرکزی حکومت تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی کا رویہ برقرار رکھے ہوئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی ریاست تلنگانہ کی تعمیر نو میں مرکزی حکومت کو مکمل تعاون کرنا چاہیئے۔ انہوں نے بتایا کہ ٹی آر ایس حکومت اور بطور خاص چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے نظام آباد ضلع کی ترقی کیلئے مکمل تعاون کا یقین دلایا ہے۔ انہوں نے ایک تلگوروز نامہ میں ان کے خلاف شائع شدہ خبروں پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ مذکورہ تلگو روز نامہ چندرا بابو نائیڈو کے پمفلٹ کی طرح کام کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر مذکورہ اخبار تلنگانہ اور تلنگانہ کے قائدین کے خلاف اپنی مہم بند نہیں کرے گا تو تلنگانہ جاگرتی کے تحت ہونے والے پروگراموں میں مذکورہ تلگو اخبار کے نمائندوں کو داخلہ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ سیما آندھرا کا میڈیا تلنگانہ کی ترقی کو برداشت نہیں کرپارہا ہے۔ کے سی آر نے سنہرے تلنگانہ کی تشکیل کیلئے کئی منفرد اسکیمات کا آغاز کیا۔ غریبوں کی بھلائی سے متعلق نئی اسکیمات کے علاوہ ہر غریب خاندان کو دو بیڈ رومس پر مشتمل مکان مفت فراہم کرنے کی اسکیم شروع کی گئی ہے جو ملک بھر میں مثالی اسکیم ہے۔ کسی بھی ریاست نے اس قدر فلاحی اسکیمات کا آغاز نہیں کیا جو کہ ٹی آر ایس حکومت نے شروع کئے ہیں۔ کویتا نے واضح کیا کہ پارلیمنٹ کے مجوزہ سرمائی سیشن میں تلنگانہ سے ناانصافیوں کے خلاف احتجاج کیا جائے گا۔ اسی دوران پارٹی کے ایک اور رکن لوک سبھا بی نرسیا گوڑ نے مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ تلنگانہ کی ترقی میں قدم قدم پر رکاوٹیں کھڑی کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT