Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکز اور تلنگانہ کے مابین باہمی روابط مستحکم کرنے کی سعی

مرکز اور تلنگانہ کے مابین باہمی روابط مستحکم کرنے کی سعی

وزیراعظم نریندر مودی کا آئندہ ماہ مجوزہ دورہ نمایاں اہمیت کا حامل
حیدرآباد۔21جولائی (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ مرکز سے تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کیلئے کوشاں ہے اور مرکزی حکومت سے بہتر تعلقات استوار کرنے کیلئے وزیر اعظم نریند مودی کا مجوزہ دورۂ تلنگانہ انتہائی معاون ثابت ہوگا۔ چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اپنے دورۂ دہلی اور وزیراعظم ہند سے ملاقات کے دوران انہیں تلنگانہ کا دورہ کرنے کی دعوت دے چکے ہیں اور توقع ہے کہ آئندہ ماہ کے وسط میں نریندر مودی تلنگانہ کا دورہ کریں گے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے بموجب حکومت تلنگانہ کی دعوت کو وزیر اعظم نے قبول کرلیا ہے ۔ تشکیل تلنگانہ کے بعد وزیراعظم کا دورۂ تلنگانہ تاریخی اہمیت کا حامل ہوگا اور اس دورے کے دوران نریندر مودی مشن بگھیرتا کا افتتاح انجام دینے کے علاوہ سنگارینی کالیریز کی جانب سے تیارکردہ برقی پلانٹ کا رسمی افتتاح انجام دیں گے۔بتایا جاتا ہے کہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل کے بعد سے تلنگانہ راشٹر سمیتی کی جانب سے وزیر اعظم کی توجہ تلنگانہ کی جانب مبذول کروانے کی کوشش کی جار ہی تھی تاکہ ریاستی و مرکزی حکومت کے درمیان تعلقات کو استحکام فراہم کیا جاسکے کیونکہ نوتشکیل شدہ ریاست تلنگانہ مرکز کی جانب سے ترقیاتی فنڈس کی منظوری کی امید رکھے ہوئے ہے۔وزیر اعظم سے ملاقات کے دوران چیف منسٹر تلنگانہ نے نہ صرف حیدرآباد ہائی کورٹ کی تقسیم کا مسئلہ اٹھایا بلکہ انہیں مشن بگھیرتا کے آغاز اور برقی پلانٹ کے افتتاح کی رسمی دعوت بھی دی۔ وزیر اعظم نریندر مودی سابق میں آندھراپردیش کا دورہ کرتے ہوئے ریاست کے نئے صدر مقام’’امراوتی‘‘ کا سنگ بنیاد رکھنے کے علاوہ تروپتی ائیر پورٹ کے ٹرمنل کا افتتاح انجام دے چکے ہیں اس وقت بھی انہیں دورۂ تلنگانہ کی دعوت دی گئی تھی بعد ازاں متعدد مرتبہ حکومت تلنگانہ نے نریندر مودی کو تلنگانہ کا دورہ کرنے کی دعوت دی لیکن سمجھا جا رہا تھا کہ تلگو دیشم کے این ڈی اے میں شامل ہونے کے سبب مودی تلنگانہ کو نظرانداز کر رہے ہیں۔ مودی کے مجوزہ دورۂ تلنگانہ کے انتظامات کا عملی طور پر آغاز ہو چکا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT