Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / مرکز کی بی جے پی حکومت تمام محاذوں پر ناکام

مرکز کی بی جے پی حکومت تمام محاذوں پر ناکام

کرنسی نوٹوں کی اچانک منسوخی سے 20 لاکھ افراد بے روزگار : برنداکرت
حیدرآباد ۔ 15 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز): قومی سی پی آئی ایم پولیٹ بیورو رکن شریمتی برنداکرت نے مرکز میں برسر اقتدار ین ڈی اے زیر قیادت بی جے پی حکومت کی کارکردگی کا مضحکہ اڑایا اور کہا کہ مرکزی حکومت تمام شعبوں و محاذوں پر ناکام ہوجانے کے نئے ریکارڈز قائم کررہی ہے ۔ آج اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے شریمتی برنداکرت نے ملک میں کرنسی نوٹوں کی اچانک منسوخی کے باعث راست یا بالواسطہ طور پر زائد از 20 لاکھ افراد کے بے روزگار ہوجانے کے واقعات پر اپنی شدید برہمی کا اظہار کیا اور مرکزی بی جے پی حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ جی ایس ٹی کا نفاذ عمل میں لاتے ہوئے عوام پر من مانی طور پر ٹیکسیس کا بھاری بوجھ عائد کیا اور کہا کہ بالخصوص پٹرولیم اشیاء ، پٹرول ، ڈیزل اور پکوان گیس کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر اضافہ کے ذریعہ مسٹر نریندر مودی کی زیر قیادت مرکزی حکومت نئے ریکارڈز قائم کررہی ہے ۔ علاوہ ازیں مسٹر نریندر مودی کی زیر قیادت مرکزی حکومت میں فرقہ وارانہ واقعات و فرقہ واری رجحانات میں زبردست اضافہ ہونے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ آئندہ مستقبل میں فرقہ پرست پارٹیوں کے خلاف ملک بھر میں سی پی آئی ایم ایک نئے متبادل کو مستحکم بنانے کے اقدامات کرے گی ۔ ریاست آندھرا پردیش میں برسر اقتدار تلگو دیشم حکومت کا تذکرہ کرتے ہوئے شریمتی برنداکرت نے کہا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر ین چندرا بابو نائیڈو وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف اب اپنی جدوجہد کا آغاز کیا ہے لیکن گذشتہ چار سال کے دوران ین ڈی اے کے ساتھ مل کر ہی کام کیا اور یاد دلایا کہ مخالف عوام نریندر مودی کی معاشی پالیسیوں کی تلگو دیشم حکومت نے بھر پور تائید و حمایت کی تھی ۔ رکن پولیٹ بیورو سی پی آئی ایم شریمتی برنداکرت نے ریاست آندھرا پردیش میں جنا سینا پارٹی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ تلگو دیشم پارٹی اور بی جے پی کے خلاف مسٹر پون کلیان کی زیر قیادت جنا سینا پارٹی سے ملکر آندھرا پردیش میں سی پی آئی ایم کام کرے گی اور بتایا کہ ریاست میں جنا سینا پارٹی کے ساتھ انتخابی مفاہمت کے سلسلہ میں آئندہ ماہ اکٹوبر میں واضح طور پر اظہار کیا جائیگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT