Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / مسئلہ فلسطین پر تعطل و ٹکراؤ ختم کرنے امریکہ کی کوشش

مسئلہ فلسطین پر تعطل و ٹکراؤ ختم کرنے امریکہ کی کوشش

بگوٹہ ۔ 13ڈسمبر۔( سیاست ڈاٹ کام ) امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے آج اُمید ظاہر کی کہ فلسطین کو مملکت کا درجہ دینے کے مسئلہ پر اقوام متحدہ میں گزشتہ ایک سال سے جاری رسہ کشی اور تعطل کا آئندہ ہفتے یوروپ میں منعقد شدنی اجلاس میں کوئی حل تلاش کرلیا جائے گا۔ کیری نے گزشتہ روز کولمبیا کے دورہ کے موقع پر اخباری نمائندوں سے بات چیت میں کہا کہ ’

بگوٹہ ۔ 13ڈسمبر۔( سیاست ڈاٹ کام ) امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے آج اُمید ظاہر کی کہ فلسطین کو مملکت کا درجہ دینے کے مسئلہ پر اقوام متحدہ میں گزشتہ ایک سال سے جاری رسہ کشی اور تعطل کا آئندہ ہفتے یوروپ میں منعقد شدنی اجلاس میں کوئی حل تلاش کرلیا جائے گا۔ کیری نے گزشتہ روز کولمبیا کے دورہ کے موقع پر اخباری نمائندوں سے بات چیت میں کہا کہ ’’مختلف گوشے اس ضمن میں مختلف سمت پیشرفت کررہے ہیں اور سوال یہ ہے کہ آیا ہم ایک ہی سمت پیشرفت بھی کرسکیں گے ‘‘ ۔ فلسطینی ذمہ داران ، اسرائیلی قبضہ کی 2 تا 3 سال کے مقررہ وقت میں برخاستگی کیلئے اقوم متحدہ کی سلامتی کونسل میں ایک مسودہ قرارداد پیش کرنے کیلئے سرگرمی سے مہم چلارہے ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ وہ یہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ رواں سال کے اختتام سے قبل مسودہ قرارداد داخل کردیا جائے جس کے پیش نظر روم میں امریکی وزیر خارجہ کیری اور اسرائیلی وزیراعظم بنیامن نیتن یاہو کے مابین آئندہ پیر کو غیرمتوقع ملاقات ہورہی ہے ۔ کیری نے بگوٹہ میں کہا کہ ’’ہم اس بات کی کوشش کررہے ہیں کہ اس مسئلہ پر اختلافات کو دور کیا جائے ‘‘۔ انھوں نے کہاکہ اسرائیلی وزیراعظم سے اُن کی مجوزہ ملاقات کا مقصد بھی یہی ہے کہ کشیدگی کو کم کیا جائے اور مستقبل میں مزید تنازعات اور تصادم کے اندیشوں کو ختم کیا جائے ۔ فلسطینیوں کی جانب سے اقوام متحدہ میں قرارداد داخل کرنے کی کوششوں کے سبب مشرق وسطیٰ میں کشیدگی پیدا ہوئی ہے

اور بالخصوص کئی یوروپی ممالک نے بھی اپنے پارلیمنٹ میں فلسطین کو مملکت کا درجہ دینے کے مسئلہ پر رائے دہی کی ہے اور چند یوروپی حکومتوں نے فلسطین کو علحدہ مملکت کی حیثیت سے تسلیم کیا ہے ۔ اس ضمن میں پرتگالی پارلیمنٹ تازہ ترین مثال ہے، جس نے یوروپی یونین سے رابطہ کے ساتھ مملکت فلسطین کو بھی تسلیم کرلیا ہے اور کہا ہے کہ حکومت کو یہ فیصلہ قبول کرلینا چاہئے ۔ فرانسیسی پارلیمنٹ کی ایوان بالا نے جمعرات کو رائے دہی کے ذریعہ اپنی حکومت سے درخواست کی ہے کہ فلسطین کو بحیثیت مملکت تسلیم کرلیا جائے ۔ آئرلینڈ کی پارلیمنٹ نے بھی ایک دن قبل چہارشنبہ کو ایسی ہی ایک قرارداد منظور کی تھی کہ برطانیہ اور اسپین کے ارکان پارلیمنٹ فلسطین کو مملکت کا درجہ دینے کے مسئلہ پر انفرادی قراردادیں منظور کرواچکے ہیں اور سویڈن نے اُن سے ایک قدم آگے بڑھتے ہوئے سرکاری طورپر فلسطین کو علحدہ مملکت کی حیثیت سے تسلیم کرلیا ہے جو ایسا قدم ہے جس پر شدید چراغ پا اسرائیل نے اپنے سفیر کو واپس طلب کرلیا۔

TOPPOPULARRECENT