Thursday , September 20 2018
Home / ہندوستان / مسئلہ کشمیر کو حل کرنے حکومت ’ انسانیت ‘ کے دائرہ میں مذاکرات کیلئے تیار

مسئلہ کشمیر کو حل کرنے حکومت ’ انسانیت ‘ کے دائرہ میں مذاکرات کیلئے تیار

پاکستان سے بہتر تعلقات کی حمایت : ہندوستان کسی ایک برادری یا ذات کا ملک نہیں : راجیہ سبھا میں راجناتھ سنگھ کا بیان

پاکستان سے بہتر تعلقات کی حمایت : ہندوستان کسی ایک برادری یا ذات کا ملک نہیں : راجیہ سبھا میں راجناتھ سنگھ کا بیان

نئی دہلی 11 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) مسئلہ کشمیر کا مستقل حل دریافت کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت نے آج شام کہا کہ وہ اس مسئلہ کو حل کرنے ’ انسانیت ‘ کے دائرہ میں بات چیت کیلئے تیار ہے اور وہ پاکستان سے بھی بہتر تعلقات کی حامی ہے ۔ وزیر داخلہ مسٹر راجناتھ سنگھ نے راجیہ سبھا کو مطلع کیا کہ ہم چاہتے ہیں کہ مسئلہ کشمیر کا مستقل حل دریافت کیا جائے ۔ ہم دستور کے دائرہ کار میں کسی بھی طرح کی بات چیت کیلئے تیار ہیں۔ اگر ضروری ہو تو ہم انسانیت کے دائرہ کار میں بھی بات چیت کرینگے ۔ اس ضمن میں انہوں نے اپوزیشن کانگریس سے جو کچھ بھی ممکن ہوسکتا ہے تعاون کرنے کی خواہش کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ‘ پاکستان کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتا ہے اور وہ اس ملک کے ساتھ در اندازی کا مسئلہ حل کرنے بھی بات چیت کیلئے تیار ہے ۔ راج ناتھ سنگھ وزارت داخلہ کے کام کاج پر مباحث کا جواب دے رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت شمال مشرق کے تخریب کاروں اور نکسلائیٹس کے ساتھ بھی بات چیت کرنے تیار ہے اگر وہ ہتھیار ڈالتے ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ حکومت تشدد سے سختی سے نمٹنے بھی اقدام کر رہی ہے ۔ وزیر موصوف نے واضح کیا کہ حکومت ذات پات ‘ مذہب اور نسل کی بنیاد پر امتیاز نہیں کرتی اور حالیہ فرقہ وارانہ واقعات کیلئے ووٹ بینک کی سیاست ذمہ دار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اس طرح کے واقعات کو برداشت نہیں کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کسی ایجنٹ کو استعمال نہیں کرینگے ۔ ہم یہ مسئلہ حل کرنے ریاستی حکومت کے سرگرم تعاون سے ہر ممکن کوشش کرینگے ۔ جموں و کشمیر میں مسلح افواج کو خصوصی اختیارات دینے کے قانون کی تنسیخ کے مطالبات پر انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر اتفاق رائے نہیں ہے ۔ تاہم انہوں نے کہا کہ کسی گورنر کو یہ اختیار ہے کہ وہ ایک سادہ اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کسی بھی علاقہ سے کسی قانونی گنجائش کو ختم کردے ۔ فرقہ وارانہ صورتحال پر انہوں نے کہا کہ ہم واقف ہیں کہ ہندوستان کسی ایک برادری ‘ ذات کا علاقہ کا ملک نہیں ہے ۔ ہماری حکومت انسانیت کی بنیاد پر سب سے انصاف کو یقینی بنانے کی پابند ہے ۔ ہماری ترجیح روزی ‘ روٹی اور تحفظ ہے ۔ حالیہ فرقہ وارانہ واقعات پر انہوں نے کہا کہ ووٹ بینک سیاست کی وجہ سے یہ واقعات پیش آئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت فرقہ وارنہ ہم آہنگی کو یقینی بنانے تمام اقدامات کریگی ۔

TOPPOPULARRECENT