Thursday , September 20 2018
Home / Top Stories / مستحق ہندوستانیوں سے ربط خارجہ پالیسی کا بنیاد ی حصہ

مستحق ہندوستانیوں سے ربط خارجہ پالیسی کا بنیاد ی حصہ

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں ہندوستانی برادری سے وزیر خارجہ سشما سوراج کا خطاب

ریاض ۔7 فروری ( کے این واصف) اب ہندوستانیوں کو ہندوستانی سفارت خانوں تک جانے کی ضرورت نہیں بلکہ اب خود ہندوستانی سفارتخانے ضرورت مند ہندوستانیوں کے پاس آئیں گے یہ ہے مودی حکومت کی خارجہ پالیسی کا بنیادی حصہ ہے ’’ ان خیالات کا اظہار کل بروز منگلوارہندوستانی وزیر خارجہ سشماسوراج نے ایک استقبالیہ پروگرام میں کہیں جو ان کے اعزاز میںریاض انڈین انٹرنیشنل اسکول کے وسیع ہال میں منعقد ہواتھا، وزیر خارجہ نے ہندوستانی برادری سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے وزارت خارجہ نے دنیا میں موجود اپنے تمام سفارتخانوں اور سفارتکاروں کو ہدایت دے رکھی ہے کہ وہ جہاں جہا ںضرورت مند ہندوستانی موجود ہوںان سے رابطہ قائم کریںنیز انکی ضرورتوں کو سمجھیں اوربروقت بلا کسی تاخیر ان کو درپیش دشواریوں کا حل فراہم کریں اور اس تعلق سے انھوں نے وزارت خارجہ کے بروقت بعض ایکشن پلان کا حوالہ دیتے ہوتے ہوئے یمن میں محصور ہندوستانیوں کا ذکر بھی کیا جنھیں ناگفتہ بہ حالت سے بخوبی کامیابی کے ساتھ باہر نکالا گیا اورجس پر ملک نے چین کا سانس تو لیا ہی دنیا کی بڑی قیادتوں نے وزیر اعظم مودی کے زیرقیادت حکومت کی تعریف بھی کی اور وزارت کی کاریہ شیلی کی ستائش بھی چونکہ ہندوستانی وزیر خارجہ جنادریہ فیسیٹول کی افتتاحی تقریب میں بطور مہمان اعزازی شرکت کررہی ہیں اس لئے انھوں نے اس موقعہ پر ہندوستانیوں کی ہمت افزائی کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ فیسٹیول میں ہندوستانی پویلین کو ضرور دیکھیں جس کا نام ہم نے ( بھارت کا دوست سعودی عرب رکھا ہے ) اور جہاں ہم نے پورے دیش کی رنگا رنگ جھلکیاں ایک جگہ سمیٹ دی ہیں موقعہ کی مناسبت سے اس بات کا ذکر ناگزیر ہے کہ وزیر خارجہ کے آڈیٹوریم پہونچتے ہی فنکشن ہال مختلف قسم کے قومی نعروں سے گونج اٹھااور سفارتخانہ میں بر سرعہدہ مامور فرسٹ سکریڑی انیل ڈوڈال نے استقبالیہ کلمات سے حاضرین، سفیر ہند احمد جاوید نیز وزیر خارجہ کا پرتپاک خیر مقدم کیا اور ، خیر مقدمی تقیر کے بعد سفیر ہند احمد جاوید نے وزیر خارجہ سے درخواست کی کہ وہ اپنے زریں خیالات سے حاضرین کو آگاہ کریں ، وزیر خارجہ نے خوبصورتی سے لوگوں کے ذہنوں میں اٹھنے والے سوالات کی خود ہی نشاندہی کی اور پھر ایک ایک کا خود ہی جواب بھی دے ڈالا جس پر لوگوں مسرت کااظہار کیا نیز اس موقعہ پردو ہندوستانیوں کو پرواسی بھارتیہ سمان سے بھی نواز ا گیا، وزیر خارجہ کوئی پچیس منٹ تک حاضرین کے درمیان رہیں اور اپنی گل افشانی گفتار کی جوت جگاتی رہیں اور ان سے یہ متوقع بھی تھا کیونکہ وہ اسٹوڈنٹ لایف میں ایک اچھی ( ڈیبیڑ)کی حیثیت سے آل انڈیا سطح پر جانی جاتی تھیں اور نیز سونے پر سہاگہ یہ بھی ہے کہ ماضی میں وہ سپریم کورٹ کی وکیل بھی رچکی ہیں یوں تو بنیادی طور پر وہ بی جے پی سیاسی پس منظر سے تعلق رکھتی ہیں لیکن اپنے برتاؤ اور تعلقات کے تناظر میں وہ پارٹی لائن سے اوپر اٹھ کر ہر سیاسی طبقہ میںیکساں طور پر مقبول ہیں علاوہ ازیں زمینی سطح کی سیاسی لیڈر ہونے کی وجہ سے وہ عام عوام کی کافی مقبول ہیں نیز انھیں ان کا بھر پور اعتماد بھی حاصل ہے، پروگرام کے خاتمہ پر فرسٹ سکریٹری انیل ڈوڈال نے حاضرین ، پروگرام منتظمین اور ریاض انٹرنیشنل اسکول کے پرنسپل، انتظامیہ کمیٹی اور اسٹاف کا تہ دل سے شکریہ اداکیا جنھوں نے پروگرام کی بخوبی اختتام تک لانے اہم رول اداکیا ۔
سابق وزیراعظم بنگلہ دیش پر جعل سازی کے
مقدمہ کا آج فیصلہ ، ملک گیر کشیدگی
ڈھاکہ۔ 7 فروری (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش کی سابق وزیراعظم خالدہ ضیاء کے خلاف جعلسازی کے مقدمہ کا فیصلہ کل سنایا جائے گا۔ انہیں ڈسمبر میں مقرر عام انتخابات میں حصہ لینے کیلئے نااہل بھی قرار دیا جاسکتا ہے۔ ان کے خلاف اس مقدمہ کے فیصلے کے پیش نظر پورے بنگلہ دیش میں سخت کشیدگی پھیل گئی ہے چنانچہ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کے انسداد کیلئے حفاظتی اقدامات سخت کردیئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT