Thursday , September 20 2018
Home / سیاسیات / مسجدوں اور مدرسوں میں جانداروں کی تصویر ممنوع

مسجدوں اور مدرسوں میں جانداروں کی تصویر ممنوع

وزیراعظم مودی کی تصویر لگانے سے اتراکھنڈ مدرسوں کا گریز
دہرہ دون ۔ 5 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اتراکھنڈ کے مدرسوں نے مذہبی عذر بتاتے ہوئے ریاستی حکومت کے ان احکام پر ہنوز تعمیل نہیں کی ہے جن کے ذریعہ انہیں اپنے احاطوں میں وزیراعظم نریندر مودی کی تصویر آویزاں کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ اتراکھنڈ میں گذشتہ سال یوم آزادی کے بعد جاری کردہ احکام میں حکومت کی طرف سے چلائے جانے والے تمام تعلیمی اداروں میں وزیراعظم مودی کی تصویر لگانے اور 2022ء تک ایک نیا ہندوستان بنانے مودی کے ویژن پر عمل آوری کا عہد لینے کا حکم دیا گیا تھا۔ اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ کے رجسٹرار اخلاق احمد نے کہا کہ ’’بعض مذہبی وجوہات کی بناء پر ریاست کے مدرسوں میں وزیراعظم کی تصویریں نہیں لگائی گئیں کیونکہ دین اسلام کے مطابق مساجد اور مدرسوں میں جانداروں کی تصویریں لگانا ممنوع ہے‘‘۔ تاہم انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کی تصویر لگانے سے انکار کو کسی فرد کی مخالف نہیں سمجھا جانا چاہئے‘‘۔ اخلاق نے وضاحت کی کہ ’’وہ (مدرسوں کے منتظمین) خاص طور پر کسی فرد کی مخالفت نہیں کررہے ہیں یہ خالصتاً مذہبی اعتقاد کا مسئلہ ہے۔ یہ ہمیں مسجدوں اور مدرسوں میں حتیٰ کہ اپنے مذہبی رہنماؤں، افراد اور جانداروں کی تصاویر لگانے کی اجازت نہیں دیتا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کی طرف سے گذشتہ اگست میں یہ احکام جاری کئے گئے تھے جو فوری طور پر اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ کی طرف سے ڈسٹرکٹ مائناریٹی ویلفیر آفیسرس کو روانہ کئے گئے تھے۔ اخلاق احمد نے کہا کہ ’’ہمیں کسی انفرادی شخصیت سے کوئی مخالفت نہیں ہے۔ اتراکھنڈ مدرسہ بورڈ کے دفتر میں وزیراعظم نریندر مودی کی تصویر ہے۔ اضلاع میں بورڈ کے تمام دفاتر میں بھی اس کی تصاویر موجود ہیں‘‘۔

TOPPOPULARRECENT