Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / مسجد اقصیٰ میںمزید جھڑپیں روکنے اقوام متحدہ کی پہل ضروری

مسجد اقصیٰ میںمزید جھڑپیں روکنے اقوام متحدہ کی پہل ضروری

٭     سعودی فرمانروا شاہ سلمان کی بان کی مون سے اپیل
٭     برطانیہ ‘ روس و فرانس کے قائدین سے فون پر گفتگو
٭    قوانین میں تبدیلی سے عدم توازن کا اندیشہ : فرانس

ریاض 17 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سعودی فرمانروا شاہ سلمان نے اقوام متحدہ کے سربراہ بان کی مون اور سلامتی کونسل کے ارکان سے اپیل کی ہے کہ وہ بیت المقدس کی مسجد الاقصی کے احاطہ میں ہوئی جھڑپوں کے بعد یہاں فوری کارروائی کی جائے ۔ سرکاری ذرائع ابلاغ کی اطلاعات میں یہ بات بتائی گئی ۔ شاہ سلمان نے اس مقدس مقام پر اسرائیل کی خطرناک کارروائیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ۔ یہاں فلسطینیوں کی مسلسل تین دنوں تک اسرائیلی پولیس سے جھڑپیں ہوئی تھیں۔ سعودی پریس ایجنسی نے یہ اطلاع دی ۔ کہا گیا ہے کہ شاہ سلمان نے یہاں اسطرح قوانین کی خلاف ورزیوں کو روکنے کیلئے سنجیدہ اور تیز رفتار بین الاقوامی کوششوں کے علاوہ سلامتی کونسل کی مداخلت پر زور دیا تاکہ جھڑپوں کے اعادہ کو روکنے فوری اقدامات کئے جاسکیں۔ ایجنسی نے کہا کہ شاہ سلمان نے وزیراعظم برطانیہ ڈیوڈ کیمرون ‘ صدر روس ولادیمیر پوٹین اور فرانس کے صدر فرینکوئی ہالینڈ کو فون کرتے ہوئے بھی اس طرح کے اقدامات پر زور دیا ۔ صدر فرانس نے کل خبردار کیا تھا کہ مسجد الاقصی سے متعلق قوانین میں کسی بھی طرح کی تبدیلی کے نتیجہ میں سنگین عدم توازن پیدا ہوگا ۔

اسلام کا تیسرا مقدس مقام بیت المقدس ہے ۔ یہاں مسجد اقصی واقع ہے ۔ یہودی بھی اسے مقدس مقام سمجھتے ہیں۔ طویل وقت سے نافذ قوانین کے تحت یہودیوں کو مسجد اقصی کے دورہ کی اجازت ہے لیکن وہ وہاں اپنی عبادت نہیں کرسکتے کیونکہ اس سے کشیدگی پیدا ہونے کا اندیشہ رہتا ہے ۔ مسلمان احتجاجیوں کا اندیشہ ہے کہ اسرائیل یہاں قوانین میں تبدیلی کرتے ہوئے یہودیوں کو عبادت کی اجازت دینے پر زور دیگا ۔ بعض یہودی گروپس یہاں زیادہ رسائی دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں اور کچھ یہودی تنظیمیں تو یہاں نیا ہیکل تعمیر کرنے کی بھی بات کرتی ہیں۔ اسرائیل کے وزیر اعظم بنجامن نتن یاہو نے بارہا کہا کہ وہ مسجد اقصی کے قوانین کو برقرار رکھیں گے تاہم فلسطینیوں نے اس پر شدید شبہات کا اظہار کیا ہے۔ صدر فلسطین محمود عباس نے کل اسرائیل پر الزام عائد کیا کہ اس نے فلسطینیوں پر بیت المقدس میں ایک گھمسان اور بے تکان جنگ مسلط کردی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT