Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / مسجد شیخ کی صفائی کا آغاز، اللہ کا گھر مصلیوں کے حوالے کرنے کا مطالبہ

مسجد شیخ کی صفائی کا آغاز، اللہ کا گھر مصلیوں کے حوالے کرنے کا مطالبہ

حیدرآباد 19 مارچ (نمائندہ خصوصی) شیخ پیٹ چوراہا پر ایک مسجد شیخ نامی تاریخی مسجد موجود ہے جوکہ گزشتہ 50 برسوں سے نہ صرف بند پڑی تھی بلکہ مسجد تک پہنچنے والے راستہ پر جنگلی جھاڑیوں کی کثرت کے علاوہ اس مسجد کے مین گیٹ پر ایک کمہار باضابطہ طور پر گھڑے بنانے کی بھٹی لگا چکا تھا جس کی وجہ سے مسجد میں داخل ہونے کا تصور ہی محال ہوچکا تھا۔ دریں اثناء اس تاریخی مسجد کو آباد کرنے کے لئے روزنامہ سیاست نے متعدد خبریں شائع کرتے ہوئے محکمہ آثار قدیمہ کی توجہ اس جانب مبذول کروائی تھی اور مسلسل کوشش کے بعد آج محکمہ آثار قدیمہ حرکت میں آتے ہوئے نہ صرف اس مسجد کے راستے کی صاف صفائی کروائی بلکہ کمہار کے ناجائز قبضہ کو ختم کرنے کے علاوہ مسجد کی مکمل صفائی بھی کی گئی۔ نمائندہ روزنامہ سیاست نے جب اس مسجد کا دورہ کیا تو اس کے محراب میں خوبصورت انداز میں قرآنی آیتیں موجود ہیں تاہم اس کے ساتھ یہ دیکھ کر دلی تکلیف بھی ہوئی کہ مسجد کی دیواروں پر غیر اخلاقی جملے بھی تحریر کردیئے گئے ہیں۔ فن تعمیر کی شاہکار یہ مسجد شیخ انتہائی خستہ حالت میں ہے اور مینار تو کبھی بھی گر سکتے ہیں۔ محکمہ آثار قدیمہ پر اب یہ ذمہ داری عائد ہوچکی ہے کہ وہ اس تاریخی ورثہ کی آہک پاشی اور تزئین نو کرنے کے ساتھ ہی مسجد کے صحن میں موجود خوبصورت حوض کو مصلیوں کو وضو کی سہولت فراہم کرنے کے قابل بھی بنائے۔ وقف ریکارڈ 672 مربع گز پر اس تاریخی مسجد جس کو آباد کرنے کا پہلا اقدام آج مکمل ہوا ہے لیکن محکمہ آثار قدیمہ جلد از جلد اس مسجد کی تزئین نو کے لئے مناسب بجٹ منظور کرنے کے علاوہ تیزی سے کام تکمیل کے ساتھ یہ مسجد مصلیوں کے حوالے کرے تاکہ یہاں پنجگانہ نماز کی ادائیگی کو یقینی بنایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT