Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / مسجد پر حملہ کرنے والا اچھا پڑوسی تھا ، مسلم پڑوسیوں کے تاثرات

مسجد پر حملہ کرنے والا اچھا پڑوسی تھا ، مسلم پڑوسیوں کے تاثرات

لندن ۔ 20 جون (سیاست ڈاٹ کام) لندن کی مسجد کے قریب حملہ کرنے والے جس 47 سالہ شخص کو گرفتار کیا گیا ہے اس واقعہ سے صرف ایک روز قبل مسلمانوں کے بارے میں بدکلامی کرنے پر ایک پب سے باہر نکال دیا گیا تھا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق 4 بچوں کا باپ ڈارین اوسبورن کو پولیس نے سیون سسٹرس روڈ پر واقع ایک مسجد کے قریب فٹ پاتھ پر ویان چڑھا کردو مسلمانوں کو ہلاک کرنے کی پاداش میں گرفتار کیا تھا۔ عینی شاہدین نے کہا تھا کہ حملہ سے قبل وہ زور زور سے چیخ رہا تھا کہ وہ تمام مسلمانوں کو قتل کردے گا۔ تاہم اس پر وہاں موجود دیگر لوگوں نے قابو پالیا۔ ملزم کی والدہ کا کہنا ہیکہ اس کا بیٹا کوئی دہشت گرد نہیں ہے اور نہ ہی اس نے مسلمانوں کے خلاف کبھی کوئی نفرت انگیز حرکت کی۔ اس موقع پر ملزم اوسبورن کے پڑوس میں رہنے والی ایک برطانوی مسلم خاتون خدیجہ شیرازی جو چھ بچوں کی ماں ہے، نے کہا کہ اوسبورن ایک ہنس مکھ شخص تھا۔ وہ لوگوں سے مذاق کیا کرتا تھا اور انہیں ہنساتا تھا۔ اس کے بارے میں ایسا سوچ کر بڑا عجیب لگ رہا ہے۔ اس نے کچھ روز قبل میرے مکان میں پانی کے نل میں موجود خامی کو دور کرتے ہوئے اسے درست بھی کیا تھا۔ اسی طرح ایک اور عراقی خاتون سلیمہ نعیمہ نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بادی النظر میں اوسبورن ایک اچھا آدمی تھا۔ وہ اپنے بچوں کو اسکول چھوڑتا تھا او ر پھر انہیں واپس لاتا تھا۔ اپنے کتوں کو بھی چہل قدمی کے لئے لیجاتا تھا۔ سمجھ میں نہیں آتا اس نے ایسی حرکت کیوں کی۔ ٹی وی پر حملہ کی فوٹیج دیکھ کر اوسبورن کو بطور ملزم جب ٹی وی پر دکھایا گیا تو ہم لوگ حیرت زدہ ہوگئے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT