Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / مسجد گٹلہ بیگم پیٹ کی تعمیر آخری مراحل میں

مسجد گٹلہ بیگم پیٹ کی تعمیر آخری مراحل میں

جناب زاہد علی خاں اور دیگر معززین کا دورہ، شہر کی انتہائی خوبصورت اور وسیع و عریض مسجد توجہ کا مرکز
حیدرآباد۔/22جولائی، ( سیاست نیوز) گٹلہ بیگم پیٹ میں وسیع و عریض خوبصورت مسجد کی تعمیر کا کام آخری مراحل میں ہے اور توقع ہے کہ اندرون ایک ماہ تعمیری کام مکمل ہوجائیگا۔ جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر ’سیاست‘ کی خصوصی دلچسپی سے دبئی کے این آر آئی جناب احمد نواز خاں 2کروڑ روپئے سے زائد کے مصارف سے یہ مسجد تعمیر کروارہے ہیں۔ جناب زاہد علی خاں نے آج نماز جمعہ مسجد گٹلہ بیگم پیٹ میں ادا کی اور تعمیری کاموں کا جائزہ لیا۔ مسجد کے ایک فلور پر تقریباً 2000 افراد کیلئے نماز کی گنجائش ہے اور فرسٹ فلور مکمل ہوچکا ہے اور باقاعدہ نمازوں کا اہتمام کیا جارہا ہے۔ مسجد کے گراؤنڈ فلور پر تعمیری کام اختتامی مرحلہ میں ہیں۔ مسجد کے اندرونی و بیرونی حصہ کو انتہائی خوبصورتی کے ساتھ ڈیزائن کیا گیا ہے اور دور سے مسجد کے 123 فٹ بلند مینار دکھائی دیتے ہیں اور قریب سے مسجد کا انتہائی دلکش نظارہ دیکھنے کو ملتا ہے۔ حیدرآباد میں اپنی نوعیت کی یہ انتہائی خوبصورت مسجد ہے جس سے گٹلہ بیگم پیٹ اور اس کے اطراف و اکناف علاقوں سے تعلق رکھنے والے مسلمانوں کے علاوہ ہائی ٹیک سٹی کے نوجوانوں کو نمازوں کی ادائیگی کا موقع ملے گا۔ عیدین کے موقع پر بھی ہزاروں افراد نماز کی ادائیگی کیلئے حاضر ہوتے ہیں۔ جناب زاہد علی خاں کے ہمراہ جناب ظہیر الدین علی خاں، جناب عامر علی خاں، جناب محمد سلیم ایم ایل سی، جناب عزیز پاشاہ سابق ایم پی، جناب تقی الدین شجیع، جناب افتخار حسین، علی مسقطی، عثمان الہاجری، احمد شریف، علی الگتمی، کلیم الدین عسکر، محمد سلیم الدین ، فیاض احمد اور دوسرے موجود تھے۔ اس موقع پر مقامی افراد نے جناب زاہد علی خاں سے ملاقات کرتے ہوئے مسجد کی تعمیر پر خوشنودی کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس اوقافی اراضی کے تحفظ کیلئے حکومت کو توجہ دلانے کی خواہش کی۔ اس علاقہ میں خوبصورت وسیع و عریض مسجد کی کافی عرصہ سے ضرورت محسوس کی جارہی تھی۔ مقامی افراد نے بتایا کہ گذشتہ دو سال سے مسجد کمیٹی نے آمدنی و خرچ کا کوئی حساب نہیں رکھا ہے۔ کمیٹی نے مسجد کے احاطہ میں ایک بورڈ پر آمدنی اور خرچ کی تفصیلات تحریر کی تھی جس میں بتایا گیا کہ 75 ہزار روپئے کمیٹی کے پاس موجود ہیں۔ یہ رقم اگر مسجد کا بینک اکاؤنٹ کھول کر جمع کردی جائے تو بہتر رہے گا۔ جمعہ اور عیدین کے موقع پر مصلیوں سے عطیات وصول کئے جاتے ہیں۔ جناب زاہد علی خاں نے کہا کہ مسجد کیلئے کسی عطیہ کی کوئی ضرورت نہیں ہے کیونکہ جناب احمد نواز خاں نے تمام اخراجات اپنے ذاتی خرچ سے ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اوقافی اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں وقف بورڈ کو توجہ دلائی گئی ہے اور ہائی کورٹ کے مخالف وقف اراضی حالیہ فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کی صلاح دی گئی۔ وقف بورڈ کے حکام نے بتایا کہ ہائی کورٹ کے فیصلہ کو آئندہ ہفتہ سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔ مسجد کے انتظامات میں مصروف محمد سلیم الدین نے جناب زاہد علی خاں کو مسجد کا تفصیلی معائنہ کرایا۔

TOPPOPULARRECENT