Saturday , November 25 2017
Home / دنیا / مسعود اظہر کے مسئلہ پر چین سے تبادلہ خیال

مسعود اظہر کے مسئلہ پر چین سے تبادلہ خیال

سشما سوراج کی چینی ہم منصب سے بات چیت ۔ دہشت گردی سے نمٹنے تعاون کی خواہش
ماسکو 18 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان نے آج چین کے ساتھ جئیش محمد کے سربراہ اور پٹھان کوٹ دہشت گردانہ حملہ کے سرغنہ مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے اپنی کوشش کو رجوع کیا اور وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے معاملہ میں باہمی تعاون انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔ سشما سوراج نے یہ مسئلہ چین کے وزیر خارجہ وانگ یئی کے ساتھ باہمی ملاقات میں اٹھایا ۔ یہ ملاقات روس ۔ ہندوستان ۔چین سہ رخی کانفرنس کے موقع پر ہوئی تھی ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے کہا کہ وزیر خارجہ نے مسعود اظہر کو اقوام متحدہ کی 1267 کمیٹی میں شامل کرنے کے مسئلہ پر چین کے ساتھ تبادلہ خیال کیا ہے اور اس بات پر زور دیا ہے کہ دونوں ممالک دہشت گردی کے مشترکہ متاثرین ہیں اور انہیں اس چیلنج سے نمٹنے کی کوشش کرنی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اس بات سے اتفاق کیا گیا کہ دونوں ممالک اس مسئلہ پر ایک دوسرے سے رابطہ میں رہیں گے ۔ جاریہ ماہ کے اوائل میں چین نے اقوام متحدہ کی تحدیدات کمیٹی کو مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے سے روک دیا تھا اور یہ کہا تھا کہ یہ معاملہ سلامتی کونسل کے معیار کے مطابق نہیں ہے ۔ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب چین نے پاکستان سے کام کرنے والے دہشت گرد گروپس اور اس کے قائدین کو دہشت گرد قرار دینے کی کوششوں کو ناکام بنادیا تھا ۔ اقوام متحدہ نے 2001 میں جئیش محمد کو دہشت گرد گروپ قرار دیا تھا تاہم 2008 کے ممبئی حملوں کے بعد مسعود اظہر پر تحدیدات عائد کرنے ہندوستان کی کوششیں ثمر آور ثابت نہیں ہوئی تھیں کیونکہ چین نے پاکستان کی ایما پر ایسا کرنے کی اجازت نہیں دی تھی ۔ چین کو سلامتی کونسل میں حق تنسیخ ( ویٹو کا اختیار ) حاصل ہے ۔ گذشتہ سال جولائی میں بھی چین نے اسی طرح پاکستان کے خلاف کارروائی کیلئے ہندوستان کی کوشش کو ناکام بنادیا تھا ۔ ہندوستان چاہتا تھا کہ ممبئی دہشت گردانہ حملوں کے سرغنہ ذکی الرحمن لکھوی کی رہائی پر پاکستان کے خلاف کارروائی کی جائے ۔

TOPPOPULARRECENT