Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ’’مسلمانوںپر حملے کرنے والے ہندو نہیں‘‘ : پرکاش راج

’’مسلمانوںپر حملے کرنے والے ہندو نہیں‘‘ : پرکاش راج

مَیں ،مودی وامیت شاہ کیخلاف ہوں ، ہندوؤں کیخلاف نہیں

حیدرآباد۔ 18 جنوری (پی ٹی آئی) مرکزی حکومت، بی جے پی قیادت، مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڈے اور اظہار خیال کی آزادی پر حملے کرنے والے گروپس پر شدید تنقید کرتے ہوئے اداکار پرکاش راج نے کہا کہ وہ مخالف ہندو نہیں ہے لیکن مودی، امیت شاہ اور ہیگڈے کے خلاف ضرور ہیں۔ جنوبی ہند کے مقبول عام اداکار نے یہ تبصرہ ’’انڈیا ٹوڈے ساؤتھ کانکلیو‘‘ کے ایک سیشن کے دوران کیا۔ ان کے تبصرے پر بی جے پی کے تلنگانہ ترجمان کرشنا ساگر راؤ نے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ پرکاش راج نے کہا کہ وہ لوگ مجھے مخالف ہندو کہتے ہیں، جی نہیںٍ! میں نریندر مودی کے خلاف ہوں، میں ہیگڈے کے خلاف ہوں، میں امیت شاہ کے خلاف ہوں۔ میری نظر میں یہ لوگ ہندو نہیں ہیں۔ مسٹر اننت کمار ہیگڈے جو کہتے ہیں کہ وہ اس ملک سے مسلمانوں کا صفایا کرنا چاہتے ہیں۔ اس طرح کی سوچ رکھنے والا اس سرزمین پر ہندو نہیں ہوسکتا۔ مسلمانوں پر حملے کرنے والے ہندو نہیں ہیں۔ جو لوگ قتل و غارت گری کی حمایت کرتے ہیں، کیا وہ ہندو ہوسکتے ہیں؟ بی جے پی ترجمان نے پرکاش راج کے بیان پر شدید اعتراض کیا، خاص طور پر مودی اور امیت شاہ کے خلاف تبصرے کو مسترد کردیا۔ پرکاش راج نے کہا کہ یہ لوگ ہمارے اظہار خیال کی آزادی کو سلب کرنے کی کوشش کرتے ہیں جبکہ وہ جو چاہے کہتے ہیں۔ پرکاش راج نے ریاستی حکومتوں پر تنقید کی جنہوں نے فلم ’’پدماوت‘‘ پر پابندی عائد کی ہے۔ یہ گروپس ، فلم کی ریلیز پر اعتراض کررہے ہیں۔ اس سے واضح ہوتا ہے کہ یہ لوگ اپنی پالیسی مسلط کرنا چاہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT