Tuesday , August 21 2018
Home / ہندوستان / مسلمانوں پر ظلم، حکومت فوراً کارروائی کرے : جمعیتہ علماء

مسلمانوں پر ظلم، حکومت فوراً کارروائی کرے : جمعیتہ علماء

نئی دہلی 15دسمبر(سیاست ڈاٹ کام ) گزشتہ دو سال سے ملک کے مختلف مقامات پر بے قصورافراد کوتشددکا نشانہ بنا یا جا رہا ہے ، کسی ایک مذہب کے افراد کو نشا نہ بنا کر شہید کیا جا رہاہے ، انہیں زدو کوب کیا جا رہا ہے یہاں تک کہ ٹرین میں سفر کر نا بھی مشکل ہو رہا ہے، مو لانا حا فظ پیر شبیر احمد صدر جمعیتہ علماء تلنگانہ و آندھرا پر دیش نے اپنے ایک بیان میں ان خیا لات کا اظہار کر تے ہو ئے کہا کہ اس جمہوری ملک میں گزشتہ دو سا ل سے کبھی ’لوو جہاد‘ کے نام پر تو کبھی گائے کے نام پر اقلیتوں کو نشانہ بنا کر انہیں زدوکوب کیا جا رہا ہے اور شہید کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ وا قعات کی طر ح اس وقت بھی را جستھان کے ضلع راجسمند میں ایک مسلم مزدور محمد افراز الاسلام جو مغربی بنگال سے تعلق رکھتا تھا اسے لوو جہاد کے نام پر بڑی ہی بیدر دی سے قتل کیا گیا۔انہوں نے کہاکہ 7دسمبر کو وکرم شلا ایکسپریس میں کچھ شر پسندوں نے اسلامی شناخت کو دیکھ کر مولانا طا ہر پر حملہ کر دیا جس کی وجہ سے مولانا کو کا فی چوٹیں آئی، مسجد کے امام صا حب کو زندہ جلا نے کی کو شش کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ جس طرح ہندوستان کی آزادی سے قبل انگریز مسلمانوں اور علماء کرام کو دیکھ کر انہیں زد و کوب کیا کرتے تھے اور انہیں شہید کر دیا کر تے تھے ، جہا ں علماء نظر آتے وہیں زندہ جلا یا کرتے تھے وہی ما حول اس وقت کچھ شر پسند افرا د ہندوستان میں پیدا کر رہے ہیں۔ انہوں نے گہرے رنج و غم کا اظہار کر تے ہو ئے کہا کہ آخر کب تک حکو مت ہند ان شر پسند افراد کے اس رویہ پرخا مو شی اختیار کرے گی ۔کیو ں ان کے خلاف کو ئی اقدام نہیں ہو رہا ہے؟ حا لا نکہ وزیراعظم نے بیان دیا تھا کہ اس طرح کے ظلم کو رو کا جا ئے گا۔انہوں نے کہاکہ جن ریا ستوں میں اس طرح کے وا قعات رو نما ہو رہے ہیں وہا ں کی حکو مت کو چاہئے کہ جلد از جلد اس طرح کے وا قعات پر فو ری طور پر روک لگا ئی جا ئے ۔آپ کی خا موشی ہی ان شر پسندوں کو اس طرح کے نا حق بے قصور افرا دپر حملہ کر نے میں مدد گار بن رہی ہے ۔ اور دن بدن ان شرپسندوں کی غنڈہ گر دی بڑھتی جا رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہم مر کزی اور جن ریاستوں میں اس طرح کے وا قعات ہو رہے ہیں وہاں کی حکو متوں سے پر زور مطا لبہ کر تے ہیں کہ فو ری طور پر ان شر پسندوں افراد کے خلاف کارر وا ئی کریں تا کہ ملک عزیز میں دو با رہ مزید اس طرح کے وا قعات رو نما نہ ہو نے پائیں اور ملک سلا متی کے سا تھ رہے اور اس کا امن و امان اور گنگا جمنی تہذیب با قی رہے ،کیونکہ اس طرح کے واقعات سے ملک کی جمہو ریت کو خطرہ ہو گا ۔انہوں نے کہاکہ ایسے وا قعات کے روک تھام کیلئے ہم کو سیکو لر ذہن رکھنے وا لوں کو سا تھ لیکر ایک سیکو لر فورس تیار کر نی چا ہئے تاکہ ملک میں امن قا ئم رہے اور ملک میں اقلیتی اور دلت سیکولر عوام محفوظ رہے ۔

TOPPOPULARRECENT