Saturday , December 15 2018

مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے کے سی آر کا پھر جھانسہ

شادنگر کے انتخابی جلسہ میں سربراہ ٹی آر ایس کے پھر ناقابل یقین وعدے

شاد نگر ؍ نارائن پیٹ ۔ 25 نومبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ہندوستان کی سیاست میں تبدیلی لانے کی سخت ضرورت ہے ۔ ملک میں نان کانگریس اور نان بی جے پی حکومتیں بننا چاہئے ۔ نان کانگریس اور نان بی جے پی حکومتیں بناکر ہی حقوق کو حاصل کیا جاسکتا ہے ۔ جس کے لئے عوامی تعاون بے حد ضروری ہے ۔ ان خیالات کا اظہار کارگذار چیف منسٹر کے سی آر نے شادنگر میں منعقدہ آشیرواد سبھا جلسہ سے مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہاکہ انجیا یادو کی نمائندگی پر حضرت سیدنا جہانگیر پیراں ؒ کے ڈیولپمنٹ کی منظوری دی گئی ‘ کانگریس اور تلگودیشم حکومت کے دور میں ترقیاتی کاموں کو نظرانداز کیا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ تلگودیشم کو ساتھ لیکر کانگریس پارٹی تلنگانہ ریاست میں اقتدار میں آنے کے لئے اور عوام کو دوبارہ دھوکہ دینے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ عظیم اتحاد سے تلنگانہ کی عوام چوکس رہنے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ سال شادنگر حلقہ میں واقع لکشمی دیوی پلی پراجکٹ کا آغاز کرنے کا تیقن دیا ۔ انہوں نے عوام پر زور دیتے ہوئے کہاکہ سنہرے تلنگانہ کی میری کوشش میں بھرپور تعاون کریں ۔ اپنی تقریر کو جاری رکھتے ہوئے کے سی آر نے کہا کہ میںجس چیز کو چاہتا ہوں اس کو حاصل کرکے رہتا ہوں میں نے اتنا بڑا تلنگانہ حاصل کیا ہے اور ضرور مسلم ریزرویشن بھی حاصل کر کے رہوں گا ۔ مرکز میں مخالف مسلم پارٹی اقتدار میں ہونے کی وجہ سے مسلم ریزرویشن کا مسئلہ حل نہیں ہوسکا ۔ مسلم ریزرویشن کے متعلق وزیر اعظم سے کم ازکم 30 مرتبہ نمائندگی کرچکا ہوں ۔ تلنگانہ میں مسلم ریزرویشن کے عمل کے متعلق انہوں نے کہا کہ اسمبلی اور کابینہ میں منظوری دے کر مرکز کو روانہ کیا گیا ۔ آخر میں انہوں نے عوام سے پرزور اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس امیدوار انجیا یادو کو بھاری اکثریت سے کامیاب بنائیں ۔ اس موقع پر کارگذار وزیر لکشما ریڈی ‘ محبوب نگر ایم پی اے پی جتیندر ریڈی ‘ ٹی آر ایس پارٹی امیدوارانجیایادو کے علاوہ مقامی مختلف منڈلوں سے وابستہ صدور ‘ زیڈ پی ٹی سی ‘ ایم پی ٹی سی ‘ سرپنچوں وارڈ ممبران کونسلرس اور دیگر موجود تھے ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے بذریعہ ہیلی کاپٹر 5 بجکر 5 منٹ پر پہنچے ‘صرف 10 منٹ عوام سے مخاطب کیا ۔

TOPPOPULARRECENT