Tuesday , October 16 2018
Home / شہر کی خبریں / مسلمانوں کو رمضان کا گفٹ نہیں تحفظات چاہئے

مسلمانوں کو رمضان کا گفٹ نہیں تحفظات چاہئے

اجمیر میں رباط کی تعمیر پر حکومت سے استفسار ، شیخ عبداللہ سہیل
حیدرآباد ۔ 6 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : صدر گریٹر حیدرآباد کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ شیخ عبداللہ سہیل نے کہا کہ مسلمانوں کو رمضان گفٹ کا لالی پپ نہیں 12 فیصد مسلم تحفظات چاہئے ۔ اجمیر میں رباط کب تعمیر ہوگا ۔ اس کی بھی وضاحت کریں ۔ شیخ عبداللہ سہیل نے کہا کہ 4 ماہ میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا چیف منسٹر کے سی آر نے وعدہ کیا تھا مگر اقتدار کے 4 سال مکمل ہونے کے باوجود مسلمانوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا گیا ۔ ان 4 سال کے دوران صرف 4 دن ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ نے پارلیمنٹ میں احتجاج کرتے ہوئے مسلمانوں کو گمراہ کرنے کے لیے مگرمچھ کے آنسو بہائے مگر حکومت کی جانب سے آج تک کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی گئی ۔ افطار پارٹیاں اور کپڑے تقسیم کرتے ہوئے ٹی آر ایس حکومت مسلمانوں پر احسان جتانے کی کوشش کررہی ہے ۔ 4 سال کے دوران کتنے غریب مسلمانوں کو ڈبل بیڈ روم مکانات فراہم کئے گئے حکومت اس کی وضاحت کرے ۔ اولڈ سٹی کو گولڈ سٹی اور استنبول کیوں نہیں بنایا ، پرانے شہر میں میٹرو ٹرین کیوں نہیں چلائی جارہی ہے ۔ اس کی وضاحت کریں ۔ پرانے شہر کی ترقی و تعمیری کاموں کے لیے 1000 کروڑ روپئے کے پیاکیج کا اعلان کیا گیا ۔ اس پر کب عمل آوری ہوگی ۔ اس کی بھی وضاحت کریں ۔ اپنی ناکامیوں سے عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے نیا سوشہ چھوڑنے میں ماہر چیف منسٹر کے سی آر عوام کی تائید سے محروم ہوگئے ہیں کیوں کہ انہوں نے ابھی تک کوئی بھی وعدہ پورا نہیں کیا ۔ تلنگانہ کے پہلے بجٹ میں اجمیر میں تلنگانہ کے زائرین کے لیے رباط تعمیر کرنے 5 کروڑ روپئے مختص کئے گئے ۔ ان چار سال کے دوران اراضی خریدنے میں ٹی آر ایس حکومت کامیاب نہیں ہوئی ۔ 4 سال کے دوران اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی ترقی و بہبود کے لیے کوئی نئی اسکیم متعارف نہیں کرائی گئی ۔ اور نہ ہی وعدے کے مطابق 80 فیصد سبسیڈی پر اقلیتی مالیاتی کارپوریشن سے کوئی قرض جاری کیا گیا ۔ جس سے ٹی آر ایس کے خلاف مسلمانوں میں ناراضگی پائی جاتی ہے ۔ جس کی 2019 کے انتخابات میں ٹی آر ایس کو قیمت چکانی پڑے گی ۔ اقلیتوں کے مفادات کا تحفظ کرنے والی کانگریس واحد جماعت ہے ۔ کانگریس کے دور حکومت میں ہی اقلیتوں کی ترقی ممکن ہے ۔ 4 فیصد مسلم تحفظات کی فراہمی کانگریس کا تاریخی کارنامہ ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT