Thursday , September 20 2018
Home / سیاسیات / مسلمانوں کو سیکولر متبادل کی تلاش

مسلمانوں کو سیکولر متبادل کی تلاش

نئی دہلی۔/7مارچ، ( فیکس ) شاہی امام مسجد فتح پوری دہلی مفتی محمد مکرم احمد نے آج نماز جمعہ سے قبل خطاب میں مسلمانوں سے اپیل کی کہ سالانہ ا متحانات کیلئے مسلم طلبہ کو تیاری کرائیں اور ان کے روشن مستقبل کی فکر کریں۔ ساتھ ہی ووٹر لسٹ میں ناموں کو چیک کرکے ناموں کا اندراج کرائیں۔ شاہی امام نے کہا کہ عام انتخابات 2014ء کا اعلان ہوچکا ہے اور س

نئی دہلی۔/7مارچ، ( فیکس ) شاہی امام مسجد فتح پوری دہلی مفتی محمد مکرم احمد نے آج نماز جمعہ سے قبل خطاب میں مسلمانوں سے اپیل کی کہ سالانہ ا متحانات کیلئے مسلم طلبہ کو تیاری کرائیں اور ان کے روشن مستقبل کی فکر کریں۔ ساتھ ہی ووٹر لسٹ میں ناموں کو چیک کرکے ناموں کا اندراج کرائیں۔ شاہی امام نے کہا کہ عام انتخابات 2014ء کا اعلان ہوچکا ہے اور سیاسی پارٹیاں اپنے منشور جاری کرکے دل لبھانے والے وعدے کرکے عوام کے سامنے آرہی ہیں ہمیں کسی دھوکہ میں آئے بغیر اپنے مستقبل کے تحفظ کیلئے اتحاد کے ساتھ غور کرکے الیکشن میں حصہ لینے کی ضرورت ہے۔ آج کوئی بڑی سیاسی پارٹی اس قابل نظر نہیں اتی کہ اس پر ہم آنکھ بند کرکے بھروسہ کرسکیں۔ جن لوگوں کو ہم نے منتخب کرکے پارلیمنٹ میں بھیجا انہوں نے ہماری اور علاقہ کی صحیح نمائندگی نہیں کی تو دوبارہ ان کو ووٹ دینا بیکار ہے۔ کچھ لوگ اپنے مفاد کی خاطر اشتہارات دے کر سیاسی پارٹیوں کیلئے اپیل کرتے نظر آتے ہیں ان سے بھی ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے۔65سال میں مسلمانوں کوووٹ بینک سمجھ کر استعمال کیا گیا۔

صورتحال یہ ہے کہ آج ہزاروں مسلم بے قصور جیلوں میں ہیں، یو اے پی اے کالا قانون بے قصوروں کو ظلم کا شکار بنارہا ہے۔ ریزرویشن پر 1950ء سے پنڈت جواہر لال نہرو نے پابندی لگوا رکھی ہے۔ مسلم قوم بھکاریوں کی طرح دردربھٹک رہی ہے۔ فسادات کی نہ تھمنے والی یلغار جاری ہے۔فرقہ پرستوں پر کوئی لگام نہیں ہے، رفاہی اسکیموں کا عملی اقدام سے کوئی واسطہ نہیں ہے ایسے میں سیکولر کہی جانے والی پارٹی کا ہم کیا کریں، کیا صرف ٹیبلیٹ تقسیم کرنے سے کسی قوم کا بھلا ہوسکتا ہے؟ یہ سب باتیں ہم سب کو غور کرکے فیصلہ کرنا ہے۔ کانگریس کے دور اقتدار میں بھی ہریانہ میں مساجد کو شہید کرنے کا سللہ جاری ہے جس پر مرکز اور مسلم نمائندے خاموش ہیں۔ آج اتحاد کی ضرورت ہے۔ بہرحال جوش اور ہوش دونوں کی ضرورت ہے۔ شاہی امام مفتی مکرم احمد نے کہا کہ ہمارا مذہب عبادت کے ساتھ ساتھ سیاست اور سماجی خدمات سے نہیں روکتا تو پھر ہم پیچھے کیوں رہیں۔لہذا مسلمان الیکشن کے روز اپنے گھر وں سے باہر آئیں اور اپنی پسند کے امیدواروں کو ووٹ دیں ورنہ بعد میں پچھتانے سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT