Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہمی کیلئے حکومت سنجیدہ

مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہمی کیلئے حکومت سنجیدہ

اسمبلی میں مباحث کے دوران وزیر پنچایت راج کے ٹی آرکا خطاب

اسمبلی میں مباحث کے دوران وزیر پنچایت راج کے ٹی آرکا خطاب
حیدرآباد ۔ 16 ۔ مارچ (سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی و پنچایت راج کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی میں حکومت سنجیدہ ہے اور اس سلسلہ میں ریٹائرڈ آئی اے ایس عہدیدار کی قیادت میں کمیشن آف انکوائری قائم کیا گیا۔ اسمبلی میں بجٹ پر مباحث کے دوران مداخلت کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ مسلمانوں اور درجہ فہرست قبائل کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کیلئے دو علحدہ کمیشن قائم کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت اقلیتوں کی ہمہ جہتی ترقی کے سلسلہ میں سنجیدہ ہے اور آئندہ پانچ برسوں میں ٹی آر ایس حکومت اقلیتوں سے کئے گئے وعدوں کی تکمیل کرے گی اور اقلیتوں کی ترقی کے اقدامات روبہ عمل لائیں جائیں گے۔ انہوں نے مسلم ارکان ا سمبلی سے کہا کہ پانچ سال بعد وہ خود حکومت کی ستائش کرنے پر مجبور ہوجائیں گے۔ کے ٹی آر نے کہا کہ کانگریس دور حکومت میں اقلیتی بہبود کیلئے ہمیشہ 200 تا 300 کروڑ روپئے مختص کئے جاتے رہے جو 23 اضلاع میں اقلیتوں کی ترقی کیلئے تھے۔ اس کے برخلاف ٹی آر ایس حکومت نے صرف دس اضلاع کے لئے ایک ہزار کروڑ سے زائد کا بجٹ مختص کیا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ متحدہ ریاست میں ملازمتوں میں اقلیتوں کے ساتھ ناانصافی کی گئی ۔ ٹی آر ایس حکومت نے ملازمتوں میں اقلیتوں کی نمائندگی میں اضافہ کیلئے تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن میں ایک اقلیتی نمائندہ نامزد کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے ایوان کی کمیٹی قائم کی گئی ہے۔ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کا وعدہ کیا ہے ، اس وعدہ کی تکمیل کے تحت ایوان کی کمیٹی قائم کی گئی۔ کے ٹی آر نے کہا کہ شادی مبارک کے علاوہ اور بھی کئی اسکیمات شروع کی جارہی ہیں۔ انہوں نے اقلیتوں کیلئے رعایتی بس پاس اور طلبہ کی مختلف کورسس میں ٹریننگ اور رہنمائی کیلئے علحدہ کیریئر گائیڈنس سنٹر کے قیام کا تیقن دیا ۔ انہوں نے کہا کہ گروپ 1 اور سیول سرویسس میں اقلیتوں کی نمائندگی میں اضافہ کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔ اقلیتوں کے مسائل پر مسلم ارکان اسمبلی کا اجلاس طلب کرنے کے بارے میں تیقن دیتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں چیف منسٹر سے بات چیت کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں آسرا پنشن اسکیم کے تحت جن افراد کو وظائف جاری کئے جارہے ہیں، ان میں 7.5 فیصد کا تعلق مسلم طبقہ سے ہے۔ انہوں نے ایوان کو یقین دلایا کہ حکومت اقلیتوں کے مسائل کی یکسوئی میں سنجیدگی کا مظاہر کرے گی اور عملی اقدامات کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT