Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلمانوں کی بینکوں میں جمع رقم پر سود کا مسئلہ

مسلمانوں کی بینکوں میں جمع رقم پر سود کا مسئلہ

67 لاکھ 50 ہزار کروڑ روپئے ، معاشی سدھار کا حل ممکن

حیدرآباد ۔ /10 ستمبر (راست) محمد عبدالرؤف خان فاؤنڈر صدر تلنگانہ مائیناریٹی ویلفیر سنگھم نے اپنے صحافتی بیان میں محمد شفیق الزماں آئی اے ایس سابق اسپیشل چیف سکریٹری تلنگانہ کے دلی احساسات کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ محمد شفیق الزماں صاحب روزنامہ سیاست میں اپنے زرین خیالات کا اظہار ایک تفصیلی مضمون میں دیا ہے جسے پڑھ کر میں بیحد متاثر ہوا ۔ محمد شفیق الزماں قوم کا درد رکھنے والے انسان ہیں ۔ انہوں نے روزنامہ میں یہ انکشاف کیا کہ دہلی اقلیتی کمیشن کے رکن صفدر حسین صاحب کے حوالے سے یہ خبر ملی ہے کہ مسلمانوں کی ایک اعشاریہ پانچ ٹریلین تقریباً 67 لاکھ 50 ہزار کروڑ روپئے کی سود رقم جو انہوں نے مختلف بینکوں میں چھوڑی ہیں اب تک بینکوں میں متروکہ اور لاوارث پڑی ہوئی ہیں ۔ یہ بات 2011 ء میں معلوم ہوئی تھی جو ریزرو بینک آف انڈیا کے حوالے سے دیا گیا ہے ۔ افسوس صد افسوس اس بات کا ہوتا ہے مسلمانوں کے ذریعہ سود کی چھوڑی ہوئی رقم کا ہے جو ہر سال تقریباً 20 فیصد کا اضافہ ہورہا ہے ۔ حالات حاضرہ پر غور فرمائیں تو ملت اسلامیہ کے ذی فکر علماء و مشایخین مسلمانوں میں شعور بیدار کریں کہ اس طرح سود کی رقم بینکوں میں چھوڑدینا مسئلہ کا حل نہیں بلکہ یہ پیسہ ناجائز ہی سہی غلط اور ناجائز کاموں میں استعمال کے بجائے اچھے ملی تنظیموں ، غریب و غرباء ، بیواؤں ، مسکین طلباء کی تعلیم پر بنکوں سے نکال کر استعمال کیا جاسکتا ہے ۔ اس طرح تلنگانہ میناریٹی ویلفیر سنگھم کا ادارہ جو مسلمانوں کی فلاح و بہبودی کیلئے کام کررہا ہے ادارہ کا مقصد غریب ماں بہنیں جو اضلاع میں بے پردگی سے پھر رہی ہیں ۔ 100 روپئے کی اجرت کیلئے کھیتوں میں اضلاع میں کام کررہی ہیں ۔ سنگھم کے انتظامی عہدیدار بہ نفس نفیس اضلاع کا دورہ کرکے ان کیلئے اناج ، برقعہ ، کپڑے پہنچارہے ہیں ۔ سنگھم کی جانب سے عورتوں کیلئے سیونگ سنٹرس ، کمپیوٹر سنٹر قائم کرنے کا ارادہ ہے ۔ معاشی حالات کی وجہ سے تاخیر ہورہی ہے اگر اس سود کی رقم جو مسلمانوں کی بینکوں میں جمع ہے مدد مل جائے تو ہماری ماں بہنوں و بیواؤں کے چہرے پر اُداسی چھائی ہوئی ہے ۔ مسکراہٹ میں تبدیل ہوسکتی ہے کاش ہر مسلمان اسے عملی جامہ پہنائیں تو یہ کارخیر کا مسئلہ حل ہوسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT