Wednesday , November 22 2017
Home / اضلاع کی خبریں / مسلمانوں کی ترقی کیلئے اردو اکیڈیمی کا قیام

مسلمانوں کی ترقی کیلئے اردو اکیڈیمی کا قیام

جگتیال ۔ 7 ۔ اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) اردو اکیڈیمی صرف مسلمانوں کیلئے ہے اردو کی ترقی اور نوجوانوں کو روزگار سے جوڑنے تربیت فراہم کرنا اس کا مقصد ہے ۔ اسکو مائناریٹی ویلفیر ڈیولپمنٹ یا مائناریٹی فینانس کارپوریشن سے مربوط کرنا مناسب نہیں ، اردو اکیڈیمی کمپیوٹر سنٹرس اور لائبریز میں خدمات انجام دینے والوں کی تین ماہ کی تنخواہیں فوری جاری کی جائے ۔ ان خیالات کا اظہار رکن اسمبلی جگتیال مسٹر ٹی جیون ریڈی نے کل شام اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کو مخاطب کرتے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اردو اکیڈیمی کو مائناریٹی کارپوریشن سے منسلک کرنا اردواور مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی ہے ، اردو اکیڈیمی صرف مسلمانوں کیلئے بنایا گیا ہے تاکہ اردو کی ترقی اور مسلمانوں کو اس کے تحت مسلم نوجوانوں کو خود روزگار سے جوڑنے کیلئے قائم کیا گیا اور اس کا علحدہ بجٹ ہوتا ہے ۔ مائناریٹی فینانس کارپوریشن اور مائناریٹی ویلفیر ڈیولپمنٹ میں صرف مسلمان ہی نہیں بلکہ دیگر طبقات عیسائی ، سکھ اور دیگر آتے ہیں ۔ حکومت مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے 12 فیصد تحفظات کا وعدہ کر کے 22 ماہ کے عرصہ سے زیادہ ہورہا ہے ، مسلمانوں کو دھوکہ میں رکھا جارہا ہے ۔ مینارٹیز کیلئے گزشتہ سال 1100 کروڑ بجٹ مختص کیا گیا 300 کروڑ بھی خرچ نہیں کیاگیا 800 کروڑ بجٹ واپس چلا گیا جبکہ اس سال 1200 کروڑ بجٹ مختص کیا گیا ۔ تین ماہ سے اردو اکیڈیمی میں خدمت انجام دینے والے 200 ملازمین کو تنخواہیں ادا نہیں کئے گئے ۔ اردو اکیڈیمی ایمپلائز اسوسی ایشن ریاستی صدر محمود علی افسر اور جگتیال ڈیویژن کمپیوٹر سنٹر اردو اکیڈیمی سے وابستہ ملازمین رکن اسمبلی کو ایک تحریری یادداشت حوالے کئے اور تنخواہوں کی اجرائی کیلئے حکومت نے نمائندگی کا مطالبہ کئے اس موقع پر فصیح اللہ عابدین ، صفی اللہ عابد کے علاوہ صدر ملت اسلامیہ ریاض الدین ماما ، میر کاظم علی جنرل سکریٹری ڈسٹرکٹ کانگریس پارٹی سابقہ بلدیہ چیرمین گری ناگہ بھوشنم ساجد اور دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT