Saturday , August 18 2018
Home / مذہبی صفحہ / مسلمان …اور ناچ گانا !

مسلمان …اور ناچ گانا !

محمد ذاکر حسین
اﷲ تبارک و تعالیٰ کا احسان و کرم ہے کہ اﷲ تعالیٰ نے مسلمانوں کوبہترین اُمت قرار دیا ۔ اسی وجہہ سے مسلمان تمام مخلوقات میں اشرف و اعلیٰ مقام رکھتے ہیں۔ مسلمانوں کو چاہئے کہ ہرجگہ اور ہرمقام پر اعلیٰ اخلاق و کردار کامظاہرہ کریں اور کوئی ایسا کام نہ کریں جس سے بہترین اُمت کا لقب دینے والا رب اور اس کے حبیب ﷺ ناراض ہوجائیں۔ شادی بیاہ کے موقعوں پر ناچنے گانے کا رواج ہے جوکہ اسلام میں ناجائز و حرام ہے اور اﷲ عزوجل کے پاس ذلیل کردینے والا عذاب ہے ۔ اﷲ تبارک و تعالیٰ فرماتا ہے : ’’اور بعض آدمی ایسے بھی ہیں جو اﷲ سے غافل بنادینے والی باتوں کو خریدتے ہیں ( یعنی پسند کرتے ہیں ) تاکہ اﷲ کے راستہ سے بے علمی کے ساتھ لوگوں کو راہِ الٰہی سے بہکائیں اور اسے ہنسی بنائیں ، یہی وہ لوگ ہیں جن کے لئے ذلیل کردینے والا عذاب ہے ‘‘۔ (لقمان :۶)
گانے سننے ، ناچنے ، اور ناچنے والوں کو دیکھنے کا کیسا عذاب ہے ملاحظہ فرمائیے ۔ گانا سننا : حضور پاک ﷺ ارشاد فرماتے ہیں : ’’گانے بجانے کو سننا حرام اور محفل میں بیٹھنا گناہ اور اس سے لذت حاصل کرنا کفر ہے ‘‘ ۔ ناچنا : حضور اکرم ﷺ ارشاد فرماتے ہیں ’’جو کوئی شخص گانے کے ذریعہ اپنی آواز کو بلند کرے اﷲ تعالیٰ اس پر دو شیطان کو مسلط فرمادیتا ہے ، ان میں سے ایک اس کاندھے پر اور دوسرا اُس کاندھے پر ہوتا ہے اور دونوں مسلسل اپنے پیروں سے مارتے رہتے ہیں ، یہاں تک کہ یہ شخص ہی خاموش ہوجائے ۔ ناچنے والوں کو دیکھنا : شیطان جو دیکھنے والوں کی آنکھوں پر وار کرتا ہے، آنکھوں کے ذریعہ اس کا اثر دل میں آتا ہے اور دل سے تمام بدن میں پھیل جاتا ہے اس کی نحوست کا یہ اثر ہوتا ہے کہ عبادت کا مزہ چلا جاتا ہے اور سجدہ ریزی میں لطف نہیں آتا ۔

TOPPOPULARRECENT