Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلمان دہشت گرد سرگرمیوں کے خلاف آواز بلند کریں

مسلمان دہشت گرد سرگرمیوں کے خلاف آواز بلند کریں

مدینہ منورہ و دیگر مقامات پر حملوں کی مذمت ، محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد۔/8جولائی، ( سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ دہشت گرد سرگرمیوں کے خلاف آواز بلند کریں تاکہ دہشت گرد انسانیت کے خلاف جرائم کی سازش میں کامیاب نہ ہوسکیں۔ محمد علی شبیر نے مدینہ منورہ اور دیگر مقامات پر دہشت گرد کارروائیوں کی سختی سے مذمت کی اور کہا کہ دہشت گردوں نے ان کارروائیوں کے ذریعہ عالم اسلام کے مسلمانوں کیلئے کھلا چیلنج دیا ہے۔ مسلمانوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ دہشت گردی کا متحدہ طور پر مقابلہ کریں اور دنیا کو یہ پیام دیں کہ اسلام کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں ہے اور نہ ہی اس طرح کی غیر اسلامی حرکتوں میں ملوث عناصر مسلمان ہوسکتے ہیں۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ مسجد نبویؐ کی حرمت اور اس کا تقدس مسلمانوں کیلئے جان سے زیادہ عزیز ہے اور وہاں بم دھماکے کی جس شدت سے مذمت کی جائے کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کارروائیوں کا مقصد مسلمانوں میں انتشار پیدا کرنا ہے جو عالمی سطح پر مخالف اسلام اور مخالف مسلم طاقتوں کا ایجنڈہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد نبویؐ کے قریب بم دھماکے کا کوئی مسلمان تصور بھی نہیں کرسکتا اور جن شیطان صفت عناصر نے یہ مذموم حرکت کی ہے انہیں کیفر کردار تک پہنچانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ آج دنیا کے مختلف حصوں میں اسلام کے نام پر دہشت گرد کارروائیوں کے ذریعہ اسلام اور مسلمانوں کو بدنام کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالم اسلام کو ان کارروائیوں کا متحدہ طور پر مقابلہ کرنا ہوگا تاکہ مخالف اسلام سازش کو ناکام کیا جاسکے۔ قائد اپوزیشن نے کہا کہ گذشتہ 1400 برسوں میں حرمین شریفین میں دہشت گردی کا ایک بھی واقعہ پیش نہیں آیا لیکن گذشتہ دنوں مدینہ منورہ میں پیش آئے دھماکے نے مسلمانوں کو مغموم کردیا ہے کیونکہ ملت اسلامیہ کی حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے اٹوٹ وابستگی ہے۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ اسلام کے نام پر دہشت گرد کارروائیوں میں ملوث عناصر کا جلد ہی صفایا ہوجائیگا۔ انہوں نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ ان سازشوں سے چوکس رہیں۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ ہندوستانی مسلمانوں کی حب الوطنی کسی شبہ سے بالاتر ہے اور وہ کسی بھی دہشت گرد تنظیم کی ہرگز تائید نہیں کریں گے۔ انہوں نے مسلم نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ دہشت گرد تنظیموں کے بہکاوے میں نہ آئیں اور انہیں عوام میں بے نقاب کرتے ہوئے قانون کے حوالے کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں مسلمانوں کی جانب سے کسی بھی دہشت گرد تنظیم کی تائید یا اس میں مسلمانوں کی شمولیت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

TOPPOPULARRECENT