Wednesday , December 12 2018

مسلم تحفظات پر اسمبلی میں کوئی سوال نہیں اٹھایا گیا

کاغذ نگر /22 مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) جناب محمد رضی حیدر سینئر ایڈوکیٹ و قومی نائب صدر مہاجنا سوشلسٹ پارٹی نے نمائندہ سیاست سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اسمبلی کا آغاز 7 مارچ کو ہوا، لیکن تعجب کی بات ہے کہ اب تک کسی نے بھی اسمبلی میں مسلم تحفظات کے سلسلے میں آواز نہیں آٹھائی، حالانکہ مسلم ارکان اسمبلی کے علاوہ ڈپٹی چیف منسٹر بھی وہاں مو

کاغذ نگر /22 مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) جناب محمد رضی حیدر سینئر ایڈوکیٹ و قومی نائب صدر مہاجنا سوشلسٹ پارٹی نے نمائندہ سیاست سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اسمبلی کا آغاز 7 مارچ کو ہوا، لیکن تعجب کی بات ہے کہ اب تک کسی نے بھی اسمبلی میں مسلم تحفظات کے سلسلے میں آواز نہیں آٹھائی، حالانکہ مسلم ارکان اسمبلی کے علاوہ ڈپٹی چیف منسٹر بھی وہاں موجود ہیں۔ انھوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے انتخابی منشور میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات دینا بھی شامل ہے، لیکن سیاسی جماعتیں تلگودیشم، کانگریس، ایم آئی ایم اور ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی کے ذہن میں یہ بات نہیں آئی کہ حکومت کی جانب سے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا اعلان ہونا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ پبلک سروس کمیشن کے نوٹیفکیشن سے قبل مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی منظوری دی جائے تو ریاست تلنگانہ میں ایک لاکھ سات ہزار ملازمتوں میں سے 12,084 ملازمتیں مسلمانوں کو ملیں گی، اس طرح ہر ضلع میں 1208 مسلمانوں کو ملازمتیں ملنے کا امکان ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر پبلک سروس کمیشن کے نوٹیفکیشن کے بعد مسلمانوں کے لئے تحفظات کا اعلان کیا گیا تو مسلمانوں کے لئے نفع بخش ثابت نہیں ہوگا، بلکہ مسلمان پسماندہ ہی رہیں گے اور آنے والی نسل ہمیں کبھی معاف نہیں کرے گی۔ جناب محمد رضی حیدر نے کہا کہ اسمبلی میں ڈپٹی چیف منسٹر موجود ہیں، جنھیں مسلمانوں کا بہی خواہ سمجھا جاتا ہے، وہ بھی خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ آخر ایسا کیوں ہو رہا ہے؟ ان کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ انھوں نے اسمبلی میں موجود مسلم ارکان اسمبلی، ڈپٹی چیف منسٹر اور مسلم دانشوروں سے اپیل کی کہ 27 مارچ تک اسمبلی میں مسلم تحفظات کی منظوری کے لئے حکومت پر دباؤ ڈالیں اور پبلک سروس کمیشن کے نوٹیفکیشن سے قبل 12 فیصد تحفظات کو منظوری دلوائیں، ورنہ مسلمانوں کے ساتھ غداری سمجھی جائے گی۔ انھوں نے کہا کہ مسلمان موجودہ حکومت پر تکیہ کئے ہوئے ہیں، اگر حکومت نے منظوری نہیں دی تو مسلمانوں کا اعتماد باقی نہیں رہے گا۔ اس موقع پر حافظ سید غوث ڈسٹرکٹ وائس پریسیڈنٹ، جناب محمد ارشد ڈسٹرکٹ جنرل سکریٹری، جناب سجاد انصاری ٹاؤن پریسیڈنٹ اور جلم پلی سرینواس مادیگا بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT