Saturday , December 15 2018

مسلم تحفظات پر نجمہ ہپت اللہ کا موقف مایوس کن

ممبئی ۔ 3 ۔ جنوری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : مرکزی وزیر اقلیتی امور نجمہ ہپت اللہ پر آج مسلم طبقہ کے ارکان نے شدید تنقید کی اور کہا کہ مسلم تحفظات پر نجمہ ہپت اللہ کا موقف افسوسناک ہے ۔ اقلیتی طبقہ کے قائدین نے آج ممبئی میں ان سے ملاقات کی اور بی جے پی زیر قیادت ریاستی حکومت کی جانب سے مسلمانوں کو تحفظات دئیے جانے سے انکار پر احتجاج کیا ۔ نجمہ

ممبئی ۔ 3 ۔ جنوری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : مرکزی وزیر اقلیتی امور نجمہ ہپت اللہ پر آج مسلم طبقہ کے ارکان نے شدید تنقید کی اور کہا کہ مسلم تحفظات پر نجمہ ہپت اللہ کا موقف افسوسناک ہے ۔ اقلیتی طبقہ کے قائدین نے آج ممبئی میں ان سے ملاقات کی اور بی جے پی زیر قیادت ریاستی حکومت کی جانب سے مسلمانوں کو تحفظات دئیے جانے سے انکار پر احتجاج کیا ۔ نجمہ ہپت اللہ ممبئی میں قومی اقلیتی ترقی و مالیاتی کارپوریشن کی سرگرمیوں کا جائزہ لیا ہے ۔ انہوں نے مولانا آزاد نیشنل اکیڈیمی برائے مہارت سے وابستہ افراد کے تعاون پر زور دیا ہے ۔ لیکن اس اجلاس کے دوران اصل موضوع مسلمانوں اور مراٹھواڑوں کو تحفظات دینے کا تنازعہ تھا ۔ حکومت مہاراشٹرا نے مسلمانوں کے لیے مختص کردہ تحفظات کو مراٹھواڑہ کے باشندوں کو منتقل کئے ہیں ۔ حکومت نے 31 مارچ 2015 تک 10,000 نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کی توقع ظاہر کی ۔ حکومت مہاراشٹرا نے مسلمانوں کے لیے پانچ فیصد تحفظات دینے کا وعدہ کیا تھا ۔ اب یہ کیس ممبئی ہائی کورٹ میں 5 جنوری سے سماعت کے لیے پیش کیا جائے گا ۔

حکومت مہاراشٹرا نے گذشتہ ماہ ریاستی اسمبلی میں مراٹھواڑہ اور مسلمانوں میں تحفظات کا مسئلہ اٹھا کر مسلمانوں کے تحفظات واپس لے لیے جب کہ ہندوؤں کو تحفظات دئیے جارہے ہیں ۔ ممبئی ہائی کورٹ نے 14 نومبر کو مراٹھوؤں کو 16 فیصد تحفظات دینے پر حکم التواء دیا تھا ۔ اور کہا کہ یہ غیر دستوری ہے ۔ عدالت نے مسلمانوں کے لیے پانچ فیصد تحفظات دینے کی اجازت دی تھی ۔ اس رولنگ کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع ہو کر حکومت مہاراشٹرا نے تحفظات پر حکم التواء کی خواہش کی تھی لیکن اس نے بھی درحواست قبول کرنے سے انکار کردیا تھا ۔ اب یہ مسئلہ 5 جنوری کو ممبئی ہائی کورٹ میں دوبارہ زیر سماعت آئے گا ۔ نجمہ ہپت اللہ نے کہا کہ اگر کانگریس یہ تحفظات دینا چاہتی تھی اس نے گذشتہ 10 سال تک مسلمانوں کو انتظار پر کیوں رکھا ۔ اور انتخابات سے دو ماہ قبل تحفظات کا اعلان کردیا ۔ یہ سراسر سیاسی مطلب براری ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT