Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم تحفظات پر کویتا کے ریمارکس بوکھلاہٹ کی علامت

مسلم تحفظات پر کویتا کے ریمارکس بوکھلاہٹ کی علامت

روزنامہ سیاست مسلمانوں کی آواز ۔ جنرل سکریٹری پردیش کانگریس عظمت اللہ حسینی
حیدرآباد ۔ 21 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : جنرل سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی سید عظمت اللہ حسینی نے روزنامہ سیاست کو مسلمانوں کی آواز قرار دیتے ہوئے 12 فیصد مسلم تحفظات پر ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ کویتا کے ریمارکس کو بوکھلاہٹ کی علامت قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’ آپ وعدہ خلافی کریں تو سرکاری ہم آواز بھی اٹھائے تو غداری ‘ یہ کہاں کا انصاف ہے اور کونسی دنیا کی سیاسی چال ہے ۔ سید عظمت اللہ حسینی نے کہا کہ روزنامہ سیاست کا تلنگانہ کی تحریک میں ناقابل فراموش رول ہے ۔ جس کا خود چیف منسٹر کے سی آر کے علاوہ ساری ٹی ار ایس نے اعتراف کیا ہے ۔ جب 12 فیصد مسلم تحفظات کے لیے روزنامہ سیاست مسلمانوں میں شعور بیدار کرنے کے لیے تحریک چلا رہا ہے تو حکمران ٹی آر ایس کے لیے کھٹک رہا ہے ۔ 2014 کے انتخابات منشور میں ٹی آر ایس نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا تذکرہ کیا ہے ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے ٹی آر ایس کو اقتدار حاصل ہونے کی صورت میں اندرون چار ماہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ مسلمانوں سے کئے گئے وعدے کو پورا نہ کرنے کی صورت میں وہ اپنا سرکٹا لیں گے ۔ وعدے کو 32 ماہ گذرچکے ہیں مگر مسلمانوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا گیا ۔ نیوز ایڈیٹرروزنامہ سیاست جناب عامر علی خاں نے مسلمانوں میں شعور بیدار کرنے اور حکومت پر دباؤ بنانے کیلئے 12 فیصد مسلم تحفظات تحریک چلائی اور تلنگانہ کے اضلاع کا دورہ کیا ہے ۔ 12 فیصد مسلم تحفظات کی تحریک چلانے سے جناب عامر علی خاں یا ان کے ارکان خاندان کو کوئی فائدہ ہونے والا نہیں ہے ۔ مسلمانوں کے روشن مستقبل کی فکر کرتے ہوئے روزنامہ سیاست نے تحریک چلائی جس پر زبردست عوامی ردعمل حاصل ہواہ ے ۔ کانگریس کی جانب سے شہر سے لے کر اضلاع تک 12 فیصد مسلم تحفظات تحریک چلاتے ہوئے حکومت کو جھنجھوڑنے کی کوشش کی ۔ مختلف رضاکارانہ تنظیموں نے بھی تحریک کو استحکام کرنے میں اہم رول ادا کیا جس سے ٹی آر ایس بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہے ۔ چیف منسٹر کی دختر و رکن پارلیمنٹ نظام آباد مسلمانوں سے کیے گئے وعدے کو پورا کرنے میں تاخیر ہونے پر مسلمانوں سے معذرت خواہی کرنے اور اپنے والد پر دباؤ بناتے ہوئے وعدے کے مطابق 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے میں اہم رول ادا کرنے کے بجائے اپنی ناکامیوں سے عوامی توجہ ہٹانے کے لیے روزنامہ سیاست کے خلاف بیجا ریمارکس کرنا انہیں زیب نہیں دیتا ۔ اخبار کا کام صرف خبروں کی ترسیل تک ہی محدود نہیں ہے ۔ سماجی شعور بیدار کرنا حکومت کی غلطیوں اور ناکامیوں کو اجاگر کرنا جمہوریت کے چوتھے ستون کی ذمہ داری ہے ۔ جس کو روزنامہ سیاست بخوبی نبھا رہا ہے حقائق کو تسلیم کرنے کی بجائے غلطیوں کی نشاندہی کرنے والوں کو دشمن سمجھنا الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے کے مترادف ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT