Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم شادی تقاریب ،چکن کی قیمتوں میں من مانی اضافہ

مسلم شادی تقاریب ،چکن کی قیمتوں میں من مانی اضافہ

ٹھوک تاجرین کے مخصوص طبقہ کی سازش، چلر فروش تاجرین پریشان حال
حیدرآباد 28 ڈسمبر (سیاست نیوز) مسلم شادی کی تقاریب میں کھانے کے کلچر میں اضافے کے سبب چکن کے ٹھوک تاجرین مسلم شادیوں کے موسم کے آغاز کے ساتھ ہی چکن کی قیمتوں میں من مانی اضافہ کررہے ہیں۔ گزشتہ چند برسوں سے یہ صورتحال واضح طور پر دیکھنے میں آرہی ہے کہ جیسے ہی مسلم شادیوں کی تقاریب کا موسم شروع ہوتا ہے چکن کی قیمت میں من مانی اضافہ ہونے لگتا ہے۔ حالیہ دنوں میں ایک ہفتہ کے دوران چکن کی ٹھوک قیمت میں 40 روپئے فی کیلو اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ 15 یوم قبل چکن کی قیمت حسب معمول دیکھی جارہی تھی۔ ٹھوک تاجرین کا یہ استدلال ہے کہ موسم سرما کے آغاز کے باعث چکن کی قیمت میں اضافہ ریکارڈ کیا جارہا ہے لیکن حقیقت یہ نہیں ہے بلکہ مسلم شادیوں کی تقاریب میں مرغن غذاؤں کے استعمال اور ہمہ اقسام کے پکوان کے باعث چکن کی کھپت زیادہ ہوتی ہے اور بغیر چکن کے مسلم خاندانوں میں تقاریب کا انعقاد معیوب تصور کیا جانے لگا ہے جس کا فائدہ مخصوص طبقہ سے تعلق رکھنے والے ٹھوک تاجرین حاصل کررہے ہیں۔ شادیوں کی تقاریب میں طعام کا اہتمام کرنے والی مختلف ایجنسیوں کی جانب سے چکن کی قیمتوں میں ہونے والے اچانک اضافہ کو منظم سازش قرار دیا جارہا ہے اور یہ دعویٰ کیا جارہا ہے کہ مسلم تقاریب میں چکن کے وافر استعمال کے باعث قیمتوں میں من مانی اضافہ کیا جارہا ہے جس کے راست اثرات تقاریب منعقد کرنے والوں پر مرتب ہورہے ہیں اور اس کا فائدہ کوئی چلر فروش تاجر کو نہیں ہورہا ہے بلکہ مخصوص طبقہ سے تعلق رکھنے والے ٹھوک بیوپاری اٹھارہے ہیں۔ شہر حیدرآباد کے نواحی علاقوں میں موجود پولٹری فارمس سے شہر کو فروخت کے لئے لائے جانے والے چکن کی قیمت میں اچانک ہوئے اِس اضافہ سے نہ صرف چلر فروش تاجرین پریشان ہیں بلکہ چکن کے کاروبار سے تعلق رکھنے والے افراد کو بھی کافی نقصان کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ ٹھوک تاجرین یہ دعویٰ کررہے ہیں کہ پرندوں کو دی جانے والی غذا کی قیمت میں ہوئے اضافہ کے سبب یہ اضافہ کیا گیا ہے جبکہ پرندوں کو فراہم کی جانے والی غذا (دانا) کی قیمت میں صرف 2 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ بیشتر ماہرین پکوان چکن کی اضافی قیمت کے سبب تقاریب میں چکن کا بائیکاٹ کرنے کی خواہش کررہے ہیں۔ چکن کے چلر فروش بیوپاریوں کا کہنا ہے کہ اگر صرف دو تا تین ہفتہ چکن کے استعمال کو ترک کردیا جاتا ہے تو ایسی صورت میں پولٹری فارم مالکین کو قیمتیں کم کرنے پر مجبور ہونا پڑے گا لیکن اس کے لئے داعیان تقاریب کو مرغن غذائیں کم از کم چکن سے تیار ہونے والی اشیاء سے اجتناب کرنا ہوگا۔ بتایا جاتا ہے کہ  آئندہ دو ہفتوں کے دوران چکن کی قیمتوں میں کمی کے کوئی آثار نہیں ہیں کیوں کہ سال نو تقاریب کے علاوہ تلسنکرات کے سبب قیمتوں میں مزید اضافہ ہی ہوسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT