Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / مسلم قائد کو کانگریس میں اہم عہدہ نہ دینے پر اظہار ناراضگی

مسلم قائد کو کانگریس میں اہم عہدہ نہ دینے پر اظہار ناراضگی

حیدرآباد /4 مارچ (سیاست نیوز) سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس سید یوسف ہاشمی نے کسی مسلم قائد کو صدر یا ورکنگ پریسیڈنٹ نہ بنانے پر سخت ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مسلمان کانگریس کے کرایہ دار نہیں، بلکہ حصہ دار ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں نے ہمیشہ کانگریس کا ساتھ دیا، لیکن کانگریس نے عہدوں کی تقسیم میں مسلمانوں کے

حیدرآباد /4 مارچ (سیاست نیوز) سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس سید یوسف ہاشمی نے کسی مسلم قائد کو صدر یا ورکنگ پریسیڈنٹ نہ بنانے پر سخت ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مسلمان کانگریس کے کرایہ دار نہیں، بلکہ حصہ دار ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں نے ہمیشہ کانگریس کا ساتھ دیا، لیکن کانگریس نے عہدوں کی تقسیم میں مسلمانوں کے ساتھ انصاف نہیں کیا۔ انھوں نے کہا کہ تلنگانہ کانگریس میں قائدانہ صلاحیت کے حامل کئی مسلم قائدین ہیں، تاہم ہمیشہ انھیں نظرانداز کیا گیا اور عہدوں کی تقسیم کے وقت ان قائدین کا انتخابات کیا جاتا ہے، جن کا نہ تو تلنگانہ تحریک میں کوئی حصہ ہے، نہ ہی کانگریس کے استحکام کے لئے انھوں نے کوئی کام کیا ہے، نہ ہی پارٹی قائدین اور کارکنوں کے ساتھ ان کا رابطہ ہے اور نہ ہی گاندھی بھون کا وہ کبھی رخ کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایسے قائدین نے اقتدار میں رہ کر صرف راج کیا ہے، اس کے باوجود ہائی کمان انھیں عہدوں سے نواز رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ دس سالہ اقتدار میں مسلم قائدین کو نہ تو کوئی عہدہ ملا اور نہ ہی اب اپوزیشن میں رہ کر تنظیمی عہدوں کی تقسیم میں ان کے ناموں پر غور کیا جا رہا ہے، لہذا اس طرح کا رجحان پارٹی کے مستقبل کے لئے نقصاندہ ثابت ہو سکتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس کے مسلم قائدین نے پارٹی کے لئے اپنی زندگیاں صرف کی ہیں، اس طرح وہ پارٹی میں برابر کے حقدار ہیں۔ اقلیتوں نے جب ساتھ دیا تو 2004ء میں کانگریس کو اقتدار حاصل ہوا اور جب ساتھ چھوڑ دیا تو 2014ء میں اقتدار سے محروم ہو گئی، اس کے باوجود پارٹی اپنا محاسبہ اور اقلیتوں میں اعتماد بحال کرنے کی کوشش نہیں کر رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT