Tuesday , December 11 2018

مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے رقمی امداد میں اضافہ

کورٹلہ /26 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) وزیر اعلی ریاست تلنگانہ مسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کی جانب سے مستحق غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے کلیانا لکشمی اسکیم کے طرز پر مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے فی جوڑا 51 ہزار رپوئے حکومت کی جانب سے جاری کرنے کے اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے چیف منسٹر مسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کے اس فیصلہ پر جناب محمد مبین پاشاہ

کورٹلہ /26 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) وزیر اعلی ریاست تلنگانہ مسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کی جانب سے مستحق غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے کلیانا لکشمی اسکیم کے طرز پر مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے فی جوڑا 51 ہزار رپوئے حکومت کی جانب سے جاری کرنے کے اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے چیف منسٹر مسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کے اس فیصلہ پر جناب محمد مبین پاشاہ ایڈوکیٹ صدر ٹی آر ایس پارٹی کورٹلہ ، جناب محمد رفیع الدین نائب صدرنشین مجلس بلدیہ کورٹلہ ، جناب محمد نجیب الدین ٹی آر ایس پارٹی اقلیتی قائد ، جناب محمد عبدالسلیم فاروقی نامہ نگار سیاست کورٹلہ ایکزیکیٹیو ممبر TUJW ضلع کریم نگر IJU جناب الیاس احمد خان صدر ویلفیر پارٹی آف انڈیا شیخ کورٹلہ ، جناب احمد عبدالقیوم سابق کونسلر مجلس بلدیہ کورٹلہ ٹی آر ایس پارٹی اقلیتی قائد جناب امیرالدین نے کہا کہ حکومت کی جانب سے مستحق غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کیلئے محکمہ اقلیتی بہبود کے ضلعی عہدیداروں کو اس اسکیم کو عملی جامہ پہنانے کیلئے فعال رول ادا کرنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں دیکھا گیا کہ محکمہ اقلیتی بہبود کے ذمہ داران نے اس ضمن میں زیادہ دلچسپی نہیں دکھائی تھی ۔ جس کی وجہ سے کئی اضلاع میں بالخصوص ضلع کریم نگر میں اس اسکیم کے تحت کم شادیاں انجام دی گئیں ۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں محکمہ کی جانب سے شادی کیلئے جو درخواست فارم جاری کئے گئے تھے ۔ اس میں بہت ساری شرائط اور پابندیاں تھیں ۔ مختلف عہدیداروں کی دستخط کی ضرورت ھی ۔ حالانکہ شہری علاقہ کے مستحقین کی درخواست پر کمشنر بلدیہ اور دیہی علاقہ کیلئے تحصیلدار یا ایم پی ٹی او کی دستخط کا لزوم کافی تھا ۔ اس کے علاوہ انکم سرٹیکفیٹ رہائشی سرٹیفکیٹ کیسٹ اور ایج سرٹیکفیٹ کا پیش کرنا لازم کیا گیا تھا ۔ غریب درخواست گذار امداد کے حصول کیلئے دفاتر کے چکر کاٹ کاٹ کر تھک ہار کر مایوس ہوجاتے ۔ ارباب مجاز سے ان مسلم قائدین سے گذارش کی کہ درخواست فارم کے ساتھ صرف راشن کارڈ اور آدھار کارڈ کا لزوم ہی رکھیں۔

TOPPOPULARRECENT