Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / مسلم مخالف خاتون سینٹیر نے پارلیمنٹ میں برقعہ پہن لیا

مسلم مخالف خاتون سینٹیر نے پارلیمنٹ میں برقعہ پہن لیا

کینبرا ۔ 17 ۔ اگست : ( سیاست ڈاٹ کام ) : ایک آسٹریلیائی سینٹیر جو ملک میں برقعہ کے استعمال پر امتناع عائد کرنے کی مہم چلا رہی ہیں ، نے آج اشتعال انگیزی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پارلیمنٹ میں داخل ہوتے وقت برقعہ پہن رکھا تھا ۔ پالین ہنیسن جو اینٹی مسلم ۔ اینٹی ایمگریشین ون نیشن مایناریٹی پارٹی کی قائد ہیں ، نے پارلیمنٹ میں تقریبا دس منٹوں تک برقعہ پہنے رکھا جس نے انہیں سر سے پاؤں تک ڈھانپ رکھا تھا اور اس کے بعد انہوں نے برقعہ اتارتے ہوئے کہا کہ سیکوریٹی کی اساس پر وہ اس نوعیت کے لباس ( برقعہ ) پر مکمل امتناع عائد کیے جانے کی خواہاں ہیں ۔ دریں اثناء اٹارنی جنرل جارج برانڈیس کی اس وقت تالیاں بجاکر زبردست ستائش کی گئی جب انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت برقعہ پر امتناع عائد نہیں کرے گی اور پالین ہنیسن کی اس اشتعال انگیزی ( برقعہ پہن کر پارلیمنٹ آنا ) کو انہوں نے ایک اسٹنٹ قرار دیا جس سے آسٹریلیائی مسلمانوں کی توہین کی کوشش کی گئی ۔ سینیٹ صدر اسٹیفین پیری نے کہا کہ پالین کی شناخت تو پارلیمنٹ میں داخل ہونے سے قبل ہی ہوگئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT