Sunday , April 22 2018
Home / شہر کی خبریں / مسلم نوجوانوں میں بے راہ روی ‘ اسلامی تعلیم نظر انداز

مسلم نوجوانوں میں بے راہ روی ‘ اسلامی تعلیم نظر انداز

اغیار شریعت میں مداخلت کیلئے کوشاں ‘ مسلمان آپس میں متصادم
حیدرآباد۔ 8 فروری (سیاست نیوز) شہر کا مسلم نوجوان طبقہ اسلامی تعلیمات سے دور بے راہ روی کا شکار ہوتا جارہا ہے۔ اسلامی تعلیمات کو نظرانداز کرنے کے علاوہ ان کا مذاق اڑایا جارہا ہے۔ آپس میں سلام، صلہ رحمی کو ترک کرکے غنڈہ گردی اور طاقت آزمانے کی دوڑ چل رہی ہے ۔ ایک دوسرے سے اخوت کے رشتہ کو فراموش کرکے خون کے پیاسے بن چکے ہے۔ گزشتہ روز چند روڈی عناصر کے ہاتھوں فرسٹ لانسر میں بے قصور مسلمان کے قتل کا واقعہ ابھی تازہ تھا کہ کل رات اورم گڈہ میں مسلم نوجوانوں کے دو گروپس آپس میں متصادم ہوگئے۔ یہ دو گروپس پرانی مخاصمت کو ترک کرکے آپس میں صلہ رحمی کے بہانے جمع ہوئے تھے۔ زخمی افراد کا کہنا ہے کہ انہیں معاملہ کو رفع دفع کرنے بلایا گیا تھا لیکن ہتھیاروں سے حملہ کرکے زخمی کردیا گیا۔ اس واقعہ میں فلک نما پولیس اسٹیشن کے ایک روڈی شیٹر کا اہم رول بتایا جارہا ہے۔ کل حملہ میں فیروز، مختار شاہ اور عدنان شاہ زخمی ہوگئے۔ مائیلار دیوپلی پولیس حدود میں مسلم نوجوانوں میں گینگ وار کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے تاہم شہریوں میں اس بات کا افسوس ہے کہ نوجوانوں میں آخر بگاڑ کیوں پیدا ہوا ہے کہ اب وہ غنڈہ گردی کو ترجیح دے رہے ہیں۔ یہ واقعہ ایسے وقت پیش آیا ہے جبکہ ملک کے نامور علمائے دین حیدرآباد میں موجود ہیں ۔ ایک طرف اسلامی شریعت میں مداخلت کی کوششیں ہورہی ہیں اور انہیں ناکام بنانے مستقبل کا لائحہ عمل تیار کیا جارہا ہے اس سلسلہ میں تمام مخالفین و حاسدین کی نظریں حیدرآباد پر ٹکی ہیں تو دوسری طرف مسلم نوجوان معمولی باتوں پر مرنے مارنے پر اتر آئے ہیں۔ شدید زخمی نوجوان کے والد نے اپنی شکایت میں ارشد، محمود، بابا خان اور اشرف کے علاوہ دیگر کے خلاف شکایت درج کرائی ۔ انسپکٹر مائیلاردیو پلی نے بتایا کہ دونوں گروپس کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ تحقیقات جاری ہیں۔

TOPPOPULARRECENT