Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلم نوجوانوں کی مزید گرفتاریوں کا امکان

مسلم نوجوانوں کی مزید گرفتاریوں کا امکان

حیدرآباد۔ 20 اکتوبر (سیاست نیوز) حیدرآباد سٹی پولیس کی اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے مجاہد سلیم جلوس جنازہ کے دوران سعیدآباد میں پیش آئے فساد مقدمہ میں گرفتار دو نوجوانوں کی ضمانت منظور کرلی گئی۔ سعیدآباد کے ساکن اسمعیل اور ارشد کو ایس آئی ٹی نے 12 سال قبل سعیدآباد پولیس اسٹیشن میں درج کئے گئے ایک کیس جس کا کرائم نمبر 410/2004 ہے، میں گرفتار کرکے متعلقہ عدالت میں پیش کیا تھا اور انہیں عدالتی تحویل میں دے دیا گیا تھا۔ اپریل 2004ء میں مولانا نصیرالدین کو گجرات کرائم برانچ کی جانب سے احمدآباد منتقل کئے جانے کے دوران ڈائریکٹر جنرل آف پولیس آندھرا پردیش لکڑی کا پل کے روبرو مولانا عبدالعلیم اصلاحی کے فرزند مجاہد سلیم اعظمی کو گجرات پولیس نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔ مجاہد سلیم کے جلوس جنازہ کے دوران سعیدآباد چوراہے کے قریب اچانک فساد برپا ہوگیا تھا جس میں کئی نوجوانوں پر پولیس اور سرکاری املاک پر سنگباری کرنے کے الزامات کے تحت ایک مقدمہ درج کیا گیا تھا، اس مقدمہ میں سابق میں کئی نوجوانوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے، اور تقریباً 12 تا 15 مفرور نوجوانوں کے خلاف غیرضمانتی وارنٹ زیرالتواء ہے۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ مسلم نوجوانوں کے خلاف زیرالتواء غیرضمانتی وارنٹ کی تعمیل کا سلسلہ جاری رہنے کا امکان ہے جس کے تحت مزید گرفتاریاں عمل میں لائی جاسکتی ہیں۔ کل ایس آئی ٹی کی جانب سے گرفتار کئے گئے نوجوان اسمعیل کی ضمانت منظور کرلی گئی ہے اور کل ایک اور نوجوان محمد ارشد کی ضمانت بھی متوقع ہے۔ سعیدآباد اور اطراف و اکناف کے علاقوں کے مسلم نوجوانوں کے خلاف زیرالتواء غیرضمانتی وارنٹس کی تعمیل کیلئے ایس آئی ٹی نوجوانوں کی نشاندہی کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کا منصوبہ تیارکیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT