Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / مسلم نوجوان نے کنویں میں گری گائے کو بچالیا

مسلم نوجوان نے کنویں میں گری گائے کو بچالیا

لکھنؤ ۔ /4 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی ایک شاندار مثال قائم کرتے ہوئے مسلم نوجوان نے 60 فٹ گہرے کنویں میں گری ایک گائے کو بچالیا ۔ دادری قتل واقعہ کے پس منظر میں نظم و نسق سے ستائش حاصل کرنے والے اس نوجوان کا نام محمد ذکی ہے ۔ گہرے کنویں میں گری ہوئی گائے کو نکالنے کیلئے وہ کنویں میں اتر گیا اور کرین کی مدد سے اسے اوپر لایا ۔ یہ گائے لکھنؤ کے عیش باغ پولیس اسٹیشن کے حدود میں اتفاقاً کنویں میں گرگئی تھی ۔ کنویں میں گائے کو گری ہوئی دیکھ کر ہجوم جمع ہوا لیکن ان میں سے کسی نے کنویں میں اترنے کی ہمت نہیں کی جبکہ ہجوم میں اکثریت ہندوؤں کی تھی ۔ ایسے میں اس مسلم نوجوان نے کنویں میں اترتے ہوئے گائے کو رسی سے باندھ کر اوپر کھینچا ۔ حکام سے کسی مدد کا انتظار کئے بغیر اس نے گائے کو بحفاظت کنویں سے باہر لایا ۔بعد ازاں حکام نے اس نوجوان محمد ذکی کے حوصلے کی ستائش کی اور شاباشی دی اور کہا کہ باہمی رواداری کی  لکھنوی روایات کو اس نوجوان نے برقرار رکھا ۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ لکھنؤ راج شیکھر نے نوجوان کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس نوجوانوں کو سلیوٹ کرتے ہیں ۔ لکھنؤ میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی یہ بہترین مثال ہے ۔ پولیس نے بھی اس نوجوان کی ستائش کی ۔ اسی طرح کے واقعہ میں جمعہ کے دن گومتی نگر پولیس اسٹیشن کے حدود میں ایک ڈرینیج مین ہول سے چار مسلم نوجوانوں نے بچھڑے کو نکالا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT