Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / مسلم پرسنل لا بورڈ ’’مولوی پرسنل لا بورڈ‘‘ میں تبدیل

مسلم پرسنل لا بورڈ ’’مولوی پرسنل لا بورڈ‘‘ میں تبدیل

امتناع عائد کرنے کا مطالبہ ، وزیر اقلیتی اُمور یوپی محسن رضا کا بیان

لکھنؤ۔ 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) طلاق ثلاثہ پر کُل ہند مسلم پرسنل لا بورڈ کے نظریات کو خلاف ِ دستور قرار دیتے ہوئے اترپردیش کے وزیر برائے اقلیتی اُمور محسن رضا نے کہا کہ یہ اِدارہ’’مولوی پرسنل لا بورڈ‘‘کہلایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کا استحصال ہورہا ہے اور بورڈ ، طلاق ثلاثہ پر دستور کے متضاد نظریات پیش کررہا ہے۔ کیا انہیں قبول کیا جاسکتا ہے۔ قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ نے فرمایا: ’’نشہ کی حالت میں نماز کے قریب نہ جاؤ‘‘ لیکن نشہ کی حالت میں طلاق کو جائز قرار دیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرسنل لا بورڈ پر امتناع عائد کرنا چاہئے کیونکہ یہ سماجی فلاح کا کام نہیں کررہا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اور چیف منسٹر یوپی یوگی آدتیہ ناتھ کی طلاق ثلاثہ مسئلہ پر تائید کرتے ہوئے محسن رضا نے کہا کہ اس دیرینہ کارروائی کا خاتمہ کرنے کیلئے نیا قانون منظور کیا جانا چاہئے۔ رضا کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے بورڈ کے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے کہا کہ مسلم پرسنل لا بورڈ ایک رجسٹرڈ تنظیم ہے، سیاسی قائدین، سیاسی مسائل کو طلاق ثلاثہ سے الگ رکھیں۔

TOPPOPULARRECENT