Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / مسلم پرسنل لا بورڈ کے موقف کو وائی ایس آر کانگریس کی حمایت

مسلم پرسنل لا بورڈ کے موقف کو وائی ایس آر کانگریس کی حمایت

پارٹی صدر جگن موہن ریڈی کی ہدایت پر وفد کی جناب عامر علی خاں سے ملاقات
حیدرآباد۔9 نومبر(سیاست نیوز) طلاق ثلاثہ اور یکساں سیول کوڈ مسئلہ پر وائی ایس آر کانگریس پارٹی کو آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے موقف کا ساتھ رہنا چاہئے کیونکہ مسلم پرسنل لاء بورڈ نے جو موقف اختیار کیا ہے اس سے مرکزی حکومت اور لاء کمیشن آف انڈیا کو ہندستانیوں کے جذبات و احساسات سے واقف کروایا جا سکے گا۔ جناب عامر علی خان نیوز ایڈیٹر سیاست نے ریاست آندھرا پردیش کے وائی ایس آر سی پی قائدین سے دفتر سیاست پر ملاقات کے دوران یہ بات کہی۔جناب حفیظ خان رکن اسمبلی کی قیادت میں آج ایک وفد نے صدر وائی ایس آر سی پی مسٹر جگن موہن ریڈی کی ہدایت پر جناب عامر علی خان سے ملاقات کیلئے پہنچا تھا ۔ وفد کے ارکان نے بتایا کہ انہوں نے طلاق ثلاثہ اور یکساں سیول کوڈ معاملہ میں صدر وائی ایس آر سی پی سے ملاقات کرتے ہوئے پارٹی کا موقف ترتیب دینے کی خواہش کی تھی پر مسٹر جگن موہن ریڈی نے ان ذمہ دار قائدین کو ہدایت دی کہ وہ اس سلسلہ میںنیوز ایڈیٹر سیاست سے مشاورت کریں اور وہ جو کہیں گے وہی پارٹی کا موقف ہوگا۔ جناب حفیظ خان نے کہا کہ پارٹی صدر کی ہدایت کے بعد یہ ملاقات کی جارہی ہے تاکہ اس مسئلہ پر پارٹی کے موقف کو پیش کیا جا سکے۔

جناب عامر علی خان نے وفد کے ارکان کو کہا کہ وہ اپنی پارٹی کو اس بات کیلئے راضی کروائیں کہ وائی ایس آر سی پی آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے موقف کی حمایت کرتے ہوئے دستور کے بنیادی ڈھانچے میں کسی قسم کی ترمیم نہیں چاہتی بلکہ اس ملک میں بسنے والے تمام شہریوں کو حاصل مذہبی آزادی کے حق میں ہے۔ نیوز ایڈیٹر سیاست نے بتایا کہ ملک میں اس طرح کی کوششیں پہلی مرتبہ نہیں ہو رہی ہیں بلکہ سابق میں بھی ہونے والی ان کوششوں کو سیکولر قوتوں نے متحدہ طور پر ناکام بناتے ہوئے آزادیٔ عقیدہ و مذہب کا تحفظ کیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ طلاق ثلاثہ اور تعدد ازواج کے معاملہ میں حکومت نے جو موقف اختیار کیا ہے اے قبول کئے جانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا جبکہ یکساں سیول کوڈ کا مسئلہ صرف مسلمانوں کا نہیں بلکہ ملک کی نصف سے زائد آبادی کا مسئلہ ہے اور کوئی مذہب یا تہذیب کے ماننے والے یکساں سیول کوڈ کو قبول نہیں کرسکتے۔

جناب عامر علی خان نے کہا کہ شریعت میں مداخلت اور یکساں سیول کوڈ کے نفاذ کا مسئلہ مسلمانوں کے ایمان سے جڑا ہوا ہے اسی لئے اسے چھیڑا نہیں جانا چاہئے بلکہ ملک بھر میں چلائی جانے والی مسلم پرسنل لاء کی تحریک کی تائید کرتے ہوئے عوام میں اعتماد کو برقرار رکھنے کی کوشش کی جانی چاہئے۔ جناب حفیظ خان رکن اسمبلی کے ہمراہ جناب شیخ سراج باشاہ‘ حافظ و قاری سید حبیب اللہ بخاری  قادری‘ سید ولی اللہ حسینی صاحب کے علاوہ مسٹر آئی ایچ فاروقی اور دیگر موجود تھے ۔ جناب مشتاق ملک صدر تحریک مسلم شبان نے بھی اس اجلاس میں وائی ایس آر سی پی قائدین کو مسلمانو ںکے جذبات و احساسات سے واقف کروایا۔جناب حفیظ خان نے بتایا کے نیوز ایڈیٹر سیاست سے ملاقات کرنے والا وفد آئندہ دو یوم میں صدر وائی ایس آر سی پی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں بنیادی حالات اور حقائق سے واقف کروادیا جائے گااور یہ بات بتا دی جائے گی کہ مسلم پرسنل لاء کے معاملہ میںادارہ ٔ سیاست کا کیا موقف ہے اور ادارہ بالخصوص کیا جانب عامر علی خان اس مسئلہ پر کیا موقف رکھتے ہیں۔ جناب عامر علی خان نے وائی ایس آر سی پی قائدین کو مشورہ دیا کہ وہ اس مسئلہ کو مسلمانوں کی حد تک محدود نہ رکھیں بلکہ یکساں سیول کوڈ کا مسئلہ ملک میں بد امنی اور تہذیبی حمل کا سبب بن سکتا ہے اسی لئے اسے روکنے کے لئے سب کو متحد ہونا پڑے گا۔

TOPPOPULARRECENT