Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / مشتبہ آئی ایس آئی ایس کارندہ کی پولیس تحویل میں توسیع

مشتبہ آئی ایس آئی ایس کارندہ کی پولیس تحویل میں توسیع

محسن کو کیس کی تحقیقات کیلئے مظفرنگر ، آگرہ اور لکھنو لے جانے کی ضرورت ، پولیس کا بیان
نئی دہلی ۔ 10  فبروری۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) آئی ایس آئی ایس کا مشتبہ کارندہ محسن ابراہیم سید جسے ہردوار کے اردھ کمبھ میلے کے دوران دہشت گردانہ حملہ انجام دینے کی مبینہ سازش رچانے پر گرفتار کیا گیا ہے ، اُسے آج دہلی کی ایک عدالت نے 20 فبروری تک پولیس تحویل میں بھیج دیا۔ محسن کو اُس کا پولیس ریمانڈ ختم ہونے کے بعد عدالت کے روبرو پیش کیا گیا اور دہلی پولیس کے خصوصی سل نے اُس کی تحویل میں رکھ کر تفتیش کیلئے توسیع چاہی اور کہا کہ اُسے کیس میں تحقیقات کے ضمن میں مظفرنگر ، آگرہ اور لکھنو کو لیجانے کی ضرورت ہے ۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ 26 سالہ محسن متوطن ممبئی شام میں قائم آئی ایس آئی ایس سے جڑے دہشت گرد یوسف الہندی کے ساتھ رابطے میں آیا اور گزشتہ سال ڈسمبر میں اپنے مکان سے روانہ ہوگیا تاکہ مشرق وسطیٰ کے اس دہشت گرد گروپ میں شامل ہوسکے ۔ پولیس کا الزام ہے کہ یوسف کی ہدایات پر محسن نے چار شریک ملزمین کو رقم حوالے کی جو اس کیس میں دہشت گرد حملے کو انجام دینے کی پاداش میں گرفتار ہیں۔ پولیس نے اپنی ریمانڈ درخواست میں کہا کہ محسن اپنے مکان سے نکلنے کے بعد ہندوستان کی کئی ریاستوں کو یوسف کی ہدایات پر گیا ۔ چنانچہ ملزم کو تحقیقات کے مقصد سے مظفرنگر ، آگرہ اور لکھنو کو لیجانا پڑے گا ۔ فیس بک اور دیگر اکاؤنٹس سے ڈاٹا بھی حاصل کیا جانا ہے ۔

ایڈیشنل سیشنس جج ریتیش سنگھ نے یہ درخواست قبول کرلی اور محسن کی پولیس تحویل میں مزید 10یوم کی توسیع کردی ۔ محسن کے علاوہ چار دیگر شریک ملزمین اخلاق الرحمن ، محمد اُسامہ ، محمد عظیم اور محمد معراج کو بھی عدالت کے روبرو پیش کیاگیا اور اُنھیں عدالتی تحویل میں بھیج دیا گیا ۔ ایک طرف محسن کی پولیس ریمانڈ میں توسیع طلب کی گئی تو دوسری طرف اسپیشل سل نے دعویٰ کیا کہ تفتیش کے دوران محسن نے یہ انکشاف کیا ہے کہ وہ اپنے ایک دوست کے ذریعہ یوسف سے رابطہ میں آیا جو آئی ایس آئی ایس میں شمولیت کیلئے افغانستان سے نکل پڑا تھا ۔ پولیس کا الزام ہے کہ چاروں گرفتار شریک ملزمین نے پوچھ تاچھ کے دوران کہا تھا کہ وہ فیس بک اور دیگر چاٹ پلاٹ فارمس کے ذریعہ یوسف سے ربط میں آئے اور اُس نے اُنھیں ہندوستان میں پرتشدد جہاد کیلئے اُکسایا ۔ پولیس کے دعویٰ کے مطابق یوسف نے ان ملزمین کو ہردوار جانے والی ٹرین میں دھماکہ کرنے یا ہردوار میں منعقد کئے جارہے اردھ کمبھ میلے کے دوران اس طرح کی کارروائی کی ذمہ داری دی ۔ اس مقصد کیلئے ملزمین نے دھماکو مادے جمع کئے ، اس کیلئے رقم حاصل کی اور سم کارڈس و دیگر چیزیں بھی خریدیں۔

TOPPOPULARRECENT