Friday , July 20 2018
Home / ہندوستان / مشرف بہ اسلام خاتون مسلم شوہر کیساتھ رہنے تیار

مشرف بہ اسلام خاتون مسلم شوہر کیساتھ رہنے تیار

جودھپور 7 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک 22 سالہ خاتون راجستھان ہائی کورٹ کی طرف سے رہا کئے جانے کے بعد آج دوبارہ اس اپنے مسلم شوہر کے پاس واپس چلی گئی۔ قبل ازیں اس کے بھائی نے الزام عائد کیاکہ زبردستی مذہب تبدیل کرتے ہوئے اسلام میں شامل کیا گیا اور ایک مسلم شخص سے اس کی شادی کی گئی تھی۔ بھائی کی شکایت پر اس خاتون کو ریاستی حکومت کی طرف سے چلائے جانے والے ریسکو ہوم کو منتقل کردیا گیا تھا۔ پائل سنگھوی عرف عارفہ مودی کو مقدمہ کی سماعت کے موقع پر راجستھان ہائی کورٹ میں پیش کیا گیا تھا۔ اس کے بھائی کے وکیل گوکلیش بوہرہ نے کہاکہ اس لڑکی نے ریسکو ہوم ناری نکیتن جانے سے انکار کردیا تھا۔ خاتون کے وکیل نے اس کو ناری نکیتن میں رکھنے کی مخالفت کرتے ہوئے کہاکہ وہ چونکہ بالغ ہے اُس کو اپنی مرضی کے مطابق عمل کرنے کی آزادی ہے۔ بوہرہ نے کہاکہ ’’عدالت نے اس سے دریافت کیا تھا اور اُس نے کہاکہ وہ ناری نکیتن جانا نہیں چاہتی۔ عدالت نے کہاکہ وہ اپنی مرضی کے مطابق (کسی بھی مقام پر) جانے کے لئے آزاد ہے چنانچہ اُس نے اپنے شوہر (فیض مودی) کے ساتھ جانے کو ترجیح دی‘‘۔ اس مقدمہ کی سماعت کل بھی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT