Monday , December 11 2017
Home / پاکستان / مشرف کی جائیداد ضبط اور اکاؤنٹس منجمد کرنے کا حکم

مشرف کی جائیداد ضبط اور اکاؤنٹس منجمد کرنے کا حکم

اسلام آباد۔ 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے خلاف آئین شکنی کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے ان کے تمام اثاثے منجمد کرنے کا حکم دیا ہے۔ جسٹس مظہر عالم میاں خیل کی سربراہی میں تین رکنی خصوصی عدالت نے منگل کو اس مقدمے کی سماعت کی۔ سماعت کے بعد عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ملزم پرویز مشرف کی پاکستان میں جتنی بھی جائیداد ہے اْسے ضبط کر لیا جائے اور اس ضمن میں ریونیو ڈیپارٹمنٹ کے کلکٹر اور ڈپٹی کلکٹر متعلقہ سیشن جج صاحبان کے پاس اس کی تفصیلات جمع کروائیں۔ عدالت نے اسٹیٹ بینک کو بھی حکم دیا ہے کہ ملزم کے پاکستان کے مختلف بینکوں میں موجود اکاؤنٹس کو منجمد کر دیا جائے اور اس بارے میں عدالت کو آگاہ کیا جائے۔ آئین شکنی کے مقدمے کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کو پہلے ہی اشتہاری قرار دے چکی ہے۔ حکومت نے عدالتی حکم پر پرویز مشرف کی پاکستان میں جائیداد سے متعلق تفصیلات جمع کروا دی ہیں۔ تاہم اس بارے میں ملزم کے وکیل کا کہنا تھا کہ حکومت نے اْن کے موکل کی جائیداد کی تفصیلات سنہ 2008 میں الیکشن کمیشن میں جمع کروائی گئی اثاثوں کی تفصیلات سے حاصل کی ہیں جبکہ اس کے بعد سابق فوجی سربراہ نے اپنی تمام تر جائیداد اپنی بیوی اور بیٹی کو حبہ کردی ہے۔ ملزم کے وکیل فیصل چودھری کا کہنا تھا کہ وہ اس عدالتی فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کریں گے۔ اْنھوں نے کہا کہ جو جائیداد کسی کو حبہ کر دی گئی ہو تو اسے کیسے ضبط کیا جا سکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT