Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / مصالحت کار شرما ہی مذاکرات کا فیصلہ کریں گے

مصالحت کار شرما ہی مذاکرات کا فیصلہ کریں گے

وادی کشمیر میں کس سے بات کی جائے کا مکمل اختیار حاصل :راجناتھ
گریٹر نوئیڈا ۔ 24 اکتوبر۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے آج کہا کہ جموں و کشمیر کیلئے نوتقرر کردہ مصالحت کار دنیشور شرما کو ہی یہ فیصلہ کرنے کا اختیار ہوگا کہ آیا ریاست میں وہ کس سے مذاکرات کریں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا شرما کو حریت کانفرنس سے بات چیت کرنی ہوگی ، جیسا کہ ریاست کے سیاستدانوں نے تجویز رکھی ہے ، راجناتھ سنگھ نے کہاکہ اس بات کا فیصلہ کرنا مصالحت کار پر منحصر ہے ۔ اُنھیں پورا اختیار ہے کہ وادی کشمیر میں کس سے بات چیت کریں اور کس سے نہ کریں۔ دنیشور شرما انٹلیجنس بیورو کے سابق ڈائرکٹر ہیں جنھیں حکومت نے کل ہی وادی کشمیر میں تمام فریقین کے ساتھ مذاکرات شروع کرنے کیلئے اپنا نمائندہ مقرر کیاہے۔ انڈین پولیس سرویس کے 1979 ء بیاچ کے ریٹائرڈ آفیسر نے ڈسمبر 2014 ء سے ڈسمبر 2016 ء تک انٹلیجنس بیورو کے ڈائرکٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ راجناتھ سنگھ نے اخباری نمائندوں کے ان سوالات کو ٹال دیا کہ آخر مصالحت کار کا تقرر عمل میں لاتے ہوئے ہندوستانی حکومت پاکستان کو کیا اشارہ دینا چاہتی ہے ؟ راجناتھ سنگھ یہاں ہند۔ تبت سرحدی پولیس کی 56 ویں پریڈ کے دوران اخباری نمائندوں سے بات چیت کررہے تھے ۔ مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے حکومت کی جانب سے مذاکرات کی پہل کرنی ہوگی ۔ وزیر داخلہ نے یہ بھی واضح کردیا کہ دنیشور شرما کو کابینی سکریٹری کا مرتبہ حاصل ہوگا اور انھیں کامل اختیارات ہے کہ وہ وادی میں کس سے بات کریں۔

TOPPOPULARRECENT