Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / مصر میں عوامی بے چینی کی تیسری سالانہ یاد ‘ تشدد میں 9 ہلاک

مصر میں عوامی بے چینی کی تیسری سالانہ یاد ‘ تشدد میں 9 ہلاک

قاہرہ ۔ /25 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مصر میں 2011 ء کے دوران بہار عرب کے تحت بڑے پیمانے پر عوامی بے چینی اور اس کے نتیجہ میں دیرینہ ڈیکٹیٹر حسنی مبارک کے زوال کی آج انتہائی پرتشدد انداز میں تیسری یاد منائی گئی ۔ اس موقع پر حریف احتجاجیوں نے ایک دوسرے پر حملے کئے اور کئی مقامات پر بم دھماکے ہوئے جس کے نتیجہ میں کم سے کم 9 افراد ہلاک ہوگئے ۔ نظر

قاہرہ ۔ /25 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مصر میں 2011 ء کے دوران بہار عرب کے تحت بڑے پیمانے پر عوامی بے چینی اور اس کے نتیجہ میں دیرینہ ڈیکٹیٹر حسنی مبارک کے زوال کی آج انتہائی پرتشدد انداز میں تیسری یاد منائی گئی ۔ اس موقع پر حریف احتجاجیوں نے ایک دوسرے پر حملے کئے اور کئی مقامات پر بم دھماکے ہوئے جس کے نتیجہ میں کم سے کم 9 افراد ہلاک ہوگئے ۔ نظریاتی طور پر بری طرح منقسم اس عرب ملک کے کئی حصوں میں سیاسی حریفوں کے مابین تصادم کے واقعات بھی پیش آئے ۔ فوج کی تائیدی حکومت کے ہزاروں حامی بشمول قاہرہ کے تحریر اسکوائر کئی اہم مقامات پر جمع ہوگئے اور حکومت کی تائید میں پرجوش نعرہ بازی کی ۔ ریالی میں شامل افراد نے مصری پرچم لہرائے اور جگہ جگہ بیانرس لگائے گئے تھے جس پر فوجی سربراہ جنرل عبدالفتح السیسی کی تصاویر تھیں ۔ ہزاروں مظاہرین نے سیسی سے مصر کے صدارتی انتخابات میں مقابلہ کرنے کی درخواست کی ۔ دوسری جانب قاہرہ اور دیگر مقامات پر پولیس نے حکومت کے مخالف احتجاجیوں کو منتشر کردیا ۔

سرکاری عہدیداروں نے کہا ہے کہ خونین بہار عرب کی تیسری سالانہ یاد کے موقع پر جنرل سیسی اور معذور صدر مرسی کے حامیوں اور اور مخالفین کی کثیر تعداد جمع ہوئی تھی ۔ تصادم کے مختلف واقعات میں 9 افراد ہلاک ہوگئے ۔ بالائی مصر کے منیہ علاقہ میں معزول صدر مرسی کے حامیوں اور پولیس کے مابین جھڑپوں میں کم سے کم دو افراد ہلاک ہوئے ۔ جیزا میں دیگر دو افراد اس وقت ہلاک ہوگئے جب سکیورٹی فورسیس کی جانب سے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کی کوشش کے دوران جھڑپ ہوگئی ۔ قاہرہ میں ایسے ہی واقعات میں 4 افراد ہلاک ہوئے جبکہ اسکندریہ میں جھڑپوں کے دوران ایک خاتون ہلاک ہوگئی ۔ حکومت کے مخالف احتجاجیوں کو منتشر کرنے پولیس کی کارروائی کے دوران کم سے کم 15 افراد زخمی ہوگئے ۔ مرسی کے حامیوں کو منتشر کرنے کیلئے پولیس نے بڑے پیمانے پر آنسو گیاس کا استعمال کیا اور ایئرگن کے ذریعہ فائرنگ کی گئی ۔ قبل ازیں قاہرہ میں آج دن کے دوران ملک بھر سے ہزاروں مظاہرین جمع ہوئے ۔ سوئز میں پولیس چھاؤنی کے قریب ایک کار دھماکہ ہوا جس میں کم سے کم 9 افراد زخمی ہوگئے ۔

TOPPOPULARRECENT