مظفر نگر :فرقہ وارانہ فسادات کے دوران اجتماعی عصمت ریزی کے 22ملزموں کا گرفتاری وارنٹ

مظفر نگر 21 جنوری (سیاست ڈاٹ کام)ایک مقامی عدالت نے 22 افراد کا ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیا جو مبینہ طور پر مظفر نگر فسادات کے دوران اجتماعی عصمت ریزی کے پانچ واقعات میں ملوث تھے۔ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ نریندر کمار نے 22 ملزموں کے گرفتاری وارنٹ جاری کردیئے جو فی الحال فرار ہیں۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے جو ان واقعات کی ت

مظفر نگر 21 جنوری (سیاست ڈاٹ کام)ایک مقامی عدالت نے 22 افراد کا ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیا جو مبینہ طور پر مظفر نگر فسادات کے دوران اجتماعی عصمت ریزی کے پانچ واقعات میں ملوث تھے۔ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ نریندر کمار نے 22 ملزموں کے گرفتاری وارنٹ جاری کردیئے جو فی الحال فرار ہیں۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے جو ان واقعات کی تحقیقات کررہی ہے ، اس سلسلہ میں عدالت سے رجوع کیا تھااور 22 ملزموں کے گرفتاری وارنٹ جاری کرنے کی گذارش کی تھی۔

مبینہ طور پر گذشتہ ستمبر میں فرقہ وارانہ فسادات کے دوران اجتماعی عصمت ریزی کے جو چھ واقعات پیش آئے تھے ان میں پانچ میں یہ 22 افراد مبینہ طور پر ملوث تھے ۔ ملزمین کی عمروں کی ایس آئی ٹی نے شناخت 22 تا 27 سال ظاہر کی ہے اور کہا ہے کہ یہ ملزم فی الحال فرار ہیں۔ ایس آئی ٹی نے سپریم کورٹ کی جانب سے ریاستی اور مرکزی حکومت کو نوٹسیں جاری کرنے کے بعد جو چھ متاثرین خواتین کی درخواستیں داخل ہونے کے بعد جاری کی گئی ہیں،گرفتاری وارنٹ جاری کرنے کی مقامی عدالت سے گذارش کی تھی۔ چھ متاثرہ خواتین کا دعوی ہے کہ فرقہ وارانہ فسادات کے دوران پھوگنا دیہات میں ان کی اجتماعی عصمت ریزی کی گئی تھی دریں اثناء قومی اقلیتی کمیشن نے بھی ملزمین کی گرفتاری میں گاخیر پر اظہار تشویش کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT