Saturday , September 22 2018
Home / سیاسیات / مظفر نگر فسادات متاثرین بھی حق رائے دہی کا استعمال کریں گے

مظفر نگر فسادات متاثرین بھی حق رائے دہی کا استعمال کریں گے

مظفر نگر۔/8 اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) مظفر نگر فسادات کے دوران عصمت ریزی سے متاثرہ سات افراد آنے والے انتخابات میں اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں گے۔ جوگیا کھیڑا موضع میں جو افراد فسادات کے دوران بے گھر ہوگئے تھے ان کے ناموں کا رائے دہندوں کی فہرست میں ایک بار پھر اندراج کیا گیا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ اس کے علاوہ فسادات کے ایسے 250 متا

مظفر نگر۔/8 اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) مظفر نگر فسادات کے دوران عصمت ریزی سے متاثرہ سات افراد آنے والے انتخابات میں اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں گے۔ جوگیا کھیڑا موضع میں جو افراد فسادات کے دوران بے گھر ہوگئے تھے ان کے ناموں کا رائے دہندوں کی فہرست میں ایک بار پھر اندراج کیا گیا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ اس کے علاوہ فسادات کے ایسے 250 متاثرین جنہیں دوسرے مقام پر باز آباد کیا گیا ہے، وہ بھی اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں گے۔ مذکورہ بالا تمام سات متاثرہ افراد اپنے ارکان خاندان کے ساتھ رہتے ہیں۔ پُرامن اور شفاف رائے دہی کو یقینی بنانے کے لیء فسادات سے متاثرہ علاقوں پھگنا، بھورا کالا بھاوڈی، محمد پورا اور رائے سنگھاڈ کراڈ میں خاتون نیم فوجی دستوں اور مقامی پولیس دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔

دریں اثناء فسادات کے دوران قتل میں ملوث ایک ملزم کا جیل میں حرکت قلب بند ہوجانے سے انتقال ہوگیا۔ جیلر مزاجی لال نے بتایا کہ 36سالہ پروین کمار نے شاملی ڈسٹرکٹ میں احسان نامی ایک شخص کو گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔ جس میں سات افراد زخمی بھی ہوئے تھے۔ کمار کو دل کا دورہ پڑنے کی وجہ سے فوری طور پر ہاسپٹل لیجایا گیا تھا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ اس کی نعش کا پوسٹ مارٹم کیا جائے گا۔ دوسری طرف ایک مقامی عدالت نے فسادات کے دوران اجتماعی عصمت ریزی کے ایک ملزم کی عدالتی تحویل میں توسیع کردی ہے۔ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ نریندر کمار نے روکی نامی ملزم کی عدالتی تحویل میں 21اپریل تک توسیع کردی ہے۔ روکی کو فسادات سے متعلق چھ معاملات میں قصور وار پایا گیا تھا اور 25مارچ کو اس کی گرفتاری عمل میں آئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT