Sunday , June 24 2018
Home / ہندوستان / مظفر نگر فسادات کا جمعرات کو ایک سال صورتِ حال کشیدہ

مظفر نگر فسادات کا جمعرات کو ایک سال صورتِ حال کشیدہ

میرٹھ ۔ 24 اگست (سیاست ڈاٹ کام) اُترپردیش کے مظفر نگر میں فرقہ وارانہ فسادات کا ایک سال مکمل ہورہا ہے اور دو چچازاد بھائیوں اور دیگر ایک شخص کی ہلاکت کی برسی جیسے جیسے قریب آرہی ہے ،یہاں حالات کشیدہ ہوتے جارہے ہیں۔ تشدد پر آمادہ ہجوم نے 28 اگست 2013ء کو کوال گاؤں میں ہلاک کردیا تھا۔ یہ دونوں مبینہ طور پر ان کی بہن کو ہراساں کرنے والے شخص کو ہلاک کرنے کے بعد فرار ہونے کی کوشش کررہے تھے۔ ان چچازاد بھائیوں اور مشتبہ طور پر ہراساں کرنے والے کا تعلق الگ الگ فرقوں سے تھا۔ گزشتہ سال تین افراد کی اس ہلاکت کے بعد متواتر پنچایتیں منعقد ہوئیں اور ضلع میں کئی ریالیاں نکالی گئیں۔ 7 ستمبر کو ننگلا مندوڑ گاؤں میں پنچایت سے واپس ہونے والوں پر ایک گروپ نے گھات لگاکر حملہ کردیا اور فسادات کا سلسلہ شروع ہوگیا جس میں 61 افراد ہلاک اور 50 ہزار سے زائد بے گھر ہوگئے تھے۔ انسپکٹر جنرل پولیس (میرٹھ زون) الوک شرما نے دعویٰ کیا کہ ضلع میں صورتِ حال پُرامن ہے لیکن میڈیا اس مسئلہ کو بھڑکا رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT