Wednesday , September 19 2018
Home / ہندوستان / مظفر نگر فسادات کی تحقیقات پر عہدیداروں کی طلبی

مظفر نگر فسادات کی تحقیقات پر عہدیداروں کی طلبی

مظفر نگر۔/25نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مظفر نگر کے فسادات کی تحقیقات کرنے والے ایک رکنی تحقیقاتی کمیشن نے اپنا آئندہ اجلا س 26نومبر تک ملتوی کردیا ہے کیونکہ حکومت نے کمیشن کی میعاد کی توسیع کی درخواست پر کوئی جواب نہیں دیا ہے۔ کمیشن نے فسادات کے سلسلہ میں بعض عہدیداروں کے بیانات ریکارڈ کرنے کیلئے اپنا اجلاس 26نومبر ملتوی کردیا ہے اور

مظفر نگر۔/25نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مظفر نگر کے فسادات کی تحقیقات کرنے والے ایک رکنی تحقیقاتی کمیشن نے اپنا آئندہ اجلا س 26نومبر تک ملتوی کردیا ہے کیونکہ حکومت نے کمیشن کی میعاد کی توسیع کی درخواست پر کوئی جواب نہیں دیا ہے۔ کمیشن نے فسادات کے سلسلہ میں بعض عہدیداروں کے بیانات ریکارڈ کرنے کیلئے اپنا اجلاس 26نومبر ملتوی کردیا ہے اور 26نومبر کو حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کردیا گیا ہے۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اندرمنی ترپاٹھی نے آج یہ اعلان کیا ۔حکومت اتر پردیش کی جانب سے تقرر کردہ ایک رکنی تحقیقاتی کمیشن کی میعاد 9نومبر کو ختم ہوگئی ہے جس نے توسیع کیلئے حکومت سے گذارش کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کمیشن کی میعاد میں توسیع کیلئے حکومت کی جانب سے اب تک کوئی اعلامیہ جاری نہیں کیا گیا ہے۔ الہ آباد ہائی کورٹ کے ریٹائر جج وشنو شاہی کمیشن کو حکومت نے گذشتہ سال 9ستمبر کو قائم کیا تھا اور کمیشن کی میعاد میں ہرچھ ماہ کے بعد دو مرتبہ توسیع دی گئی تھی۔ ریاستی حکومت نے 23اگسٹ 2013ء کو کوال سے شروع ہوئے تشدد کی تحقیقات کیلئے اندرون دو ماہ رپورٹ پیش کرنے کی کمیشن کو ہدایت دی تھی۔ بعد ازاں کمیشن کی میعاد میں توسیع دی گئی ۔ کمیشن سے یہ بھی کہا گیا تھا کہ مظفر نگر اور مضافات میں پھوٹ پڑے تشدد پر قابو پاتے ہی انتظامیہ کی لاپرواہی کا پتہ چلایا جائے جبکہ ان فسادات میں60افراد ہلاک اور ہزاروں لوگ بے گھر ہوگئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT