Saturday , January 20 2018
Home / Top Stories / مظفر پور میں تشدد ،9 مکانات نذر آتش ، 5 ہلاکتیں

مظفر پور میں تشدد ،9 مکانات نذر آتش ، 5 ہلاکتیں

مظفر پور ؍ پٹنہ ۔ 19 جنوری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بہار کے مظفرپور میں آج ایک اور جھلسی ہوئی نعش ایک کھیت سے ملی جس کے ساتھ آتشزنی میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد پانچ ہوگئی ، جس میں مغویہ نوجوان کی موت شامل ہے ، جبکہ چیف منسٹر جتن رام مانجھی جنھوں نے اپنا دورۂ ممبئی مختصر کردیا ، یہاں پہونچے اور انھوں نے صورتحال کا جائزہ لیا۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ

مظفر پور ؍ پٹنہ ۔ 19 جنوری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بہار کے مظفرپور میں آج ایک اور جھلسی ہوئی نعش ایک کھیت سے ملی جس کے ساتھ آتشزنی میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد پانچ ہوگئی ، جس میں مغویہ نوجوان کی موت شامل ہے ، جبکہ چیف منسٹر جتن رام مانجھی جنھوں نے اپنا دورۂ ممبئی مختصر کردیا ، یہاں پہونچے اور انھوں نے صورتحال کا جائزہ لیا۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس مظفرپور آر کے مشرا نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ آج یہاں کے قریبی کھیت سے ایک اور جھلسی ہوئی نعش برآمد کی گئی ہے ۔ ایس ایس پی نے کہاکہ کم از کم 14 افراد کو مظفرپور کے ایک گاؤں میں کل پیش آئے تشدد کے سلسلے میں گرفتارکرلیا گیا ہے۔ اس تشدد میں ہجوم نے مغویہ نوجوان کی نعش برآمد ہونے پر 9 مکانات کو آگ لگادی تھی ۔ اس علاقہ میں سکیورٹی سخت کردی گئی ہے جیسا کہ بہار ملٹری پولیس (بی ایم پی ) کی پانچ کمپنیاں (500 پرسونل)کی اضافی تعیناتی ہوئی ہے ، ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل آف پولیس ( ہیڈکوارٹرس ) گپتیشور پانڈے نے یہ بات کہی ، جو کل رات سے مظفرپور میں کیمپ کئے ہوئے ہیں ۔ سینئر جنتادل ( یو ) لیڈر اور سابق چیف منسٹر نتیش کمار نے آج مظفرپور واقع کی مذمت کی ۔ ’’کل کے اس واقعہ کی اطلاع ملنے پر میں نے چیف سکریٹری ، ڈائرکٹر جنرل آف پولیس اور مظفرپور میں ہندو اور مسلم دونوں برادریوں کے پارٹی قائدین سے بات کی کہ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو بہرصورت برقرار رکھا جاسکے‘‘ نتیش نے ضلع پٹنہ میں پھلواری شریف میں ایک تقریب کے موقع پر اخباری نمائندوں کو یہ بات بتائی ۔ انھوں نے کہا کہ خاطیوں کو فوری کیفرکردار تک پہنچانا چاہئے ۔ جے ڈی ( یو ) راجیہ سبھا رکن علی انور نے متاثرہ موضع کا دورہ کرنے کے بعد کہا کہ پولیس نظم و نسق کی طرف سے ’’خامی‘‘ ہوئی ہے کہ وہ مغویہ نوجوان کی نعش کی دستیابی کے بعد ’’تاخیر ‘‘سے پہونچے اور ادعا کیا کہ ’’مظفرپور کو مظفرنگر نہیں بننے دیا جائے گا ‘‘۔ مرکزی مملکتی وزیر برائے دیہی ترقیات رام کرپال یادو نے اس واقعہ کو ریاستی حکومت کی ’’ناکامی‘‘ سے منسوب کیا ۔ ایل جے پی لوک سبھا رکن (حلقۂ ویشالی ) رام سنگھ نے بھی ضلع نظم و نسق کی مبینہ ناکامی کی بات کی ۔ چیف منسٹر نے اس واقعہ کی پرنسپل سکریٹری داخلہ اور اے ڈی جی (ہیڈکوارٹرس) کے ذریعہ تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ انھوں نے مہلوکین کے ورثاء کیلئے پانچ لاکھ روپئے کے ایکس گریشیا کا اعلان کیااور کہا کہ زخمیوں کو پچاس ہزار روپئے معاوضہ دیا جائے گا اور اُن کا علاج سرکاری خرچ پر ہوگا ۔ چیف منسٹر نے تباہ شدہ مکانات کی دوبارہ تعمیر اور دیگر املاک کیلئے بھی معاوضہ کا اعلان کیا ۔ اے ڈی جی اور ایس ایس پی نے موجودہ صورتحال کو پرامن بتایا ۔ ایس ایس پی نے کہا کہ کئی لوگ جو اس تشدد کے تناظر میں گاؤں چھوڑکر چلے گئے تھے ، واپس آنے لگے ہیں۔ کمشنر تیرہٹ اتل پرساد نے کہاکہ معاوضہ ابھی تک 16 خاندانوں کو ادا کیا جاچکا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT