Tuesday , December 18 2018

معظم جاہی مارکٹ ، آصف جاہی دور کی یادگار حکام کی لاپرواہی کا شکار

تاریخی ورثہ کے تحفظ کے لیے اروند کمار آئی اے ایس کی مساعی
حیدرآباد ۔ 11 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : قلب شہر حیدرآباد میں واقع معظم جاہی مارکٹ قدیم تاریخی عمارت ہے جو آصف سابع حضور نظام میر عثمان علی خاں بہادر کے فرزند معظم جاہ بہادر کے نام سے موسوم ہے ۔ 83 سالہ یہ تہذیبی عمارت رفتہ رفتہ اپنی شان اور عظمت کھوتی جارہی ہے ۔ محکمہ بلدیہ کی لاپرواہی کے باعث اس کی خاطر خواہ نگہداشت نہ ہونے کے سبب مختلف گوشوں سے مسلسل نمائندگیاں کی جاتی رہی ہیں لیکن اب گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے معظم جاہی مارکٹ کی تزئین نو اور اس عمارت میں واقع دکانات کی نئی صورت گری کے لیے قدم اٹھائے ہیں ۔ چنانچہ کارپوریشن نے معظم جاہی مارکٹ کی مکمل نگہداشت کے لیے خانگی کنسلٹنٹ کو یہ ذمہ داری سونپنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ محکمہ میونسپل اڈمنسٹریشن اور اربن ڈیولپمنٹ کے پرنسپل سکریٹری مسٹر اروند کمار نے بتایا کہ اس تاریخی ورثہ کے تحفظ اور نگہداشت کے لیے 3 تا 4 ماہ کے اندرون یہ کام مکمل کرلیا جائے گا ۔ معظم جاہی مارکٹ 1935 میں قائم کی گئی تھی جو سبزی اور میوہ فروشوں کو الاٹ کی گئی تھی تاکہ وہ اپنا مال فروخت کرسکے اس مارکٹ کو ہمیشہ سے مرکزی حیثیت حاصل رہی ۔ شہر کے مختلف حصوں سے عوام یہاں آتے اور ترکاری ، پھل اور دیگر اشیاء کی خریداری کرتے ، آج سبزی اور میوہ فروشوں کی تیسری یا چوتھی نسل اپنا کاروبار جاری رکھے ہوئے ہے ۔ اس مارکٹ میں سبزی اور میوہ کے علاوہ دیگر کاروبار بھی ہیں جن میں قابل ذکر آئسکریم کی دکانات ہیں جن کا بیوپار موسم گرما کے علاوہ دیگر ایام میں بھی ہوتاہے ۔ موسم گرما میں کاروبار کا عالم یہ ہوجاتا ہے کہ روڈ کے پاس بھی شائقین آئسکریم کھڑے ہو کر کھاتے دکھائی دیتے ہیں ۔ بدقسمتی سے اس عظیم کاروباری مرکز کی حالت افسوسناک ہوگئی ہے ۔ عمارت کے اندرونی حصوں میں ڈرینج کا ابلتا ہوا پانی احاطہ میں ٹھہر جاتا ہے اور بعض دکانات میں اندر تک پانی داخل ہوجاتا ہے ۔ بارش کے موسم میں پانی کے نکاسی کے نہ ہونے کے باعث صارفین کو کئی طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا ہوتا ہے ۔ اب تو یہ حالت ہوگئی ہے کہ اس عمارت کے احاطہ اور اطراف و اکناف میں کچرے کا انبار لگا رہتا ہے ۔ اس سے ماحول میں تعفن پیدا ہوگا ۔ اس صورت حال کے پیش نظر میونسپل اڈمنسٹریشن کے سکریٹری مسٹر ارون کمار نے مارکٹ کی تزئین نو کے کام کو جلد سے جلد مکمل کرنے کے لیے بعض خانگی کمپنیوں سے ٹنڈرس طلب کئے تھے اور آخر کار ایچ ایم ٹی لمٹیڈ کو اس کام کی ذمہ داری دینے کا فیصلہ کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ تعمیراتی کاموں میں بوسیدہ دکانات کی تعمیر اور مرمت ، چھتوں سے پانی کا رسنا اور غیر کارکرد کلاک ٹاور کو کارکرد بنانے کے لیے عصری ٹکنالوجی سے استفادہ کرنے کا منصوبہ شامل ہے ۔ معظم جاہی مارکٹ سے ہورڈنگس اور دکانات کے سائن بورڈس نکال دئیے جائیں گے جس سے اس کی خوبصورتی کو از سر نو بحال کیا جاسکتا ہے ۔ اس کے علاوہ محکمہ بلدیہ نے طئے کیا ہے کہ تزئین نو کے اس کام کے باوجود موجودہ دکانداروں کو اپنا کاروبار کرنے دیا جائے گا ۔۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT