Tuesday , April 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / معقول سہولتوں کیساتھ معیاری تعلیم کے زرّین مواقع

معقول سہولتوں کیساتھ معیاری تعلیم کے زرّین مواقع

سدی پیٹ اقلیتی اقامتی اسکول کیلئے 10 ایکر اراضی کی فراہمی کا تیقن : ہریش راؤ

سدی پیٹ۔ 12 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) اقلیتی اقامتی اسکول میں تعلیم حاصل کرنے والے ہر طالب علم کیلئے ہر سال ایک لاکھ 25 ہزار روپئے ریاستی حکومت کی جانب سے خرچ کئے جارہے ہیں۔ جس میں معیاری تعلیم کے ساتھ طلباء کو مفت میں عمدہ غذا فراہم کی جارہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار ریاستی وزیر بھاری آبپاشی و مارکیٹنگ ٹی ہریش راؤ نے اقلیتی اقامتی اسکول کے سالانہ جلسہ میں کیا۔ یہ جلسہ سدی پیٹ اوپن آڈیٹوریم محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے منعقد کیا گیا تھا۔ ہریش راؤ نے بتایا کہ غریب طلباء جو بیرونی ممالک میں اعلیٰ تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں، انہیں حکومت کی جانب سے 20 لاکھ گرانٹ (اورسیز) فراہم کئے جائیں گے۔ ہریش راؤ نے کہا کہ سدی پیٹ میں 10 ایکڑ اراضی اقلیتی اقامتی مدرسہ کی تعمیر کیلئے فراہم کی جائے گی اور 15 کروڑ روپئے کی لاگت سے بوائز کیلئے اس طرح 15 کروڑ روپئے کی لاگت سے گرلز کیلئے اقامتی مدرسہ تعمیر کیا جائے گا اور مستقبل میں اس اسکول کو جونیر کالج بھی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سدی پیٹ، دوباک، حسن آباد مقامات پر اقامتی مدرسوں میں عہدیدار طلباء کو شریک کروانے کی ذمہ داری لیں اور امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ 4 تا 5 سال میں اقامتی مدرسہ میں داخلہ ملنا مشکل ہوگا۔ ہریش راؤ نے کہا کہ ریاست بھر 204 اقلیتی اقامتی مدرسہ میں قائم کرنا ملک بھر میں چیف منسٹر کے سی آر کا کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان کو اجاگر کرنے کیلئے ریاستی حکومت کی جانب سے ٹھوس اقدامات کئے جارہے ہیں اور طلباء کو اردو زبان میں عبور حاصل کرنے کے بھی اقدامات کئے جائیں گے۔ اس پروگرام میں نائب صدرنشین بلدیہ اطہر پٹیل اور اقلیتی ارکان بلدیہ موجود تھے۔ طلبہ کی جانب سے بہترین ڈرامے اور کلچرل پروگرامس پیش کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT